نواز شریف علاج کیلئے بیرون ملک جائینگے، اہلخانہ نے منا لیا

نواز شریف نے سروسز اسپتال میں شب گزارنے کا فیصلہ کیوں کیا؟

اسلام اباد: سابق وزیراعظم اور مسلم لیگ ن کے تاحیات قائد نواز شریف کے علاج کے لئے قائم میڈیکل بورڈ نے ان کے بیرون ملک علاج کی سفارش کردی ہے۔ اہلخانہ نے بیرون ملک علاج کےلیے نوازشریف کو رضا مند کرلیا ہے۔ 

ذرائع کا کہناہے کہ نوازشریف کے پلیٹ لیٹس میں کمی کی اب تک تشخیص نہیں ہوسکی۔ ادویات اورانجیکشن کے باوجود پلیٹ لیٹس کا مسلسل کم رہنا خطرنات اندرونی بیماری کاباعث ہوسکتا ہے۔

ذرائع کے مطابق اہلخانہ نے بیرون ملک علاج کےلیے نوازشریف کو رضا مند کرلیا ہے۔ قانونی پیچیدگیاں دور ہونے کے بعد نوازشریف علاج کےلیے بیرون ملک جائیں گے۔

واضح رہے کہ اس سے قبل سابق وزیراعظم نواز شریف علاج کےلیے بیرون ملک جانے میں مسلسل ہچکچاہٹ کا شکاررہے۔

یہ بھی پڑھیے: نواز شریف اور انکی صاحبزادی مریم نواز کتنے عرصے بعد گھر لوٹے؟

یاد رہے کہ نواز شریف کو گزشتہ روز سروسز اسپتال لاہور سے جاتی امراء منتقل کیا گیا تھا۔ وہ لگ بھگ 16روز سروسز اسپتال میں زیر علاج رہے ۔

سابق وزیراعظم کی بگڑتی صحت پر پارٹی نے عدالت کا دروازہ کھٹکھٹایا اور طبی بنیادوں پر نرمی کی اپیل کی۔  لاہور ہائیکورٹ سے چودھری شوگر ملز میں پچیس اکتوبر اور اسلام آباد ہائیکورٹ سے العزیزیہ ریفرنس میں انتیس اکتوبر کو ضمانت پر رہائی کا پروانہ ملا۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز