’نوازشریف کو علاج کے لیے فی الفور باہر بھیجنا چاہیے’

نوازشریف اور مریم نواز کی پاکستان آمد - لائیو اپ ڈیٹس | humnews.pk

اسلام آباد: مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز نے کہا ہے کہ سابق وزیراعظم نوازشریف کو علاج کے لیے فی الفور باہر بھیجنا چاہیے۔

چوہدری شوگر ملز کیس کے حوالے سے احتساب عدالت میں پیشی کے موقع پر ذرائع ابلاغ کے نمائندوں سے غیر رسمی گفتگو کرتے ہوئے لیگی رہنما کا کہنا تھا کہ میاں نواز شریف کی طبیعت بہت زیادہ خراب ہے، میں بہت مشکل سے انہیں چھوڑ کر عدالت میں پیش ہوئی ہوں۔

جے یو آئی ف کے سربراہ مولانا فضل الرحمان کے دھرنے میں جانے کے حوالے سے سوال پر ان کا کہنا تھا کہ ’ میری پوری توجہ نواز شریف کی صحت پر ہے، سیاست کے لیے ابھی پوری زندگی پڑی ہے۔

انہوں نے کہا کہ میں یہ وقت اپنے والد کے ساتھ گزارنا چاہتی ہوں، سیاست ساری زندگی چلتی رہے گی والدین دوبارہ نہیں ملتے۔

مریم نواز نے کہا کہ  میں اپنی والدہ کو ایک سال پہلے کھو چکی ہوں، میں میاں صاحت کو ملازموں اور نرسوں پر نہیں چھوڑتی اور چوبیس گھنٹے ان کے ساتھ رہتی ہوں۔

انہوں نے کہا کہ مجھے میاں صاحب کی بڑی فکر ہوتی ہے، ان کا جہاں پر بھی علاج معالجہ ہوسکتا ہے انہیں وہاں جانا چاہیے، سرکاری اور پرائیویٹ میڈیکل بورڈ نے پاکستان میں علاج معالجے کی جو سہولیات میسر تھیں فراہم کردی، اب انہیں کسی اسپشلائزڈ ڈائیگنوسٹک سنٹر جانا چاہیے جہاں ان کی بیماری کی تشخیص ہوسکے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ نواز شریف کی زندگی بہت قیمتی ہے، ان کے پلیٹ لٹس میں کمی کی وجہ جاننا ضروری ہے۔

مسلم لیگ ن کی نائب صدر نے کہا کہ  نواز شریف کا نام ای سی ایل سے نکالنے کے لیے درخواست دینے بارے علم نہیں، اس حوالے سے تمام  قانونی معاملات شہباز شریف دیکھ رہے ہیں۔

انہوں نے بتایا کہ  میں ابھی سفر نہیں کرسکتی، میرا پاسپورٹ عدالت کے پاس ہے، میرے لیے یہ بڑا مشکل ہے کہ میاں صاحب علاج کے لیے باہر چلے جائیں اور میں ان کی تیمارداری نہ کرسکوں۔

 

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز