قومی اسمبلی : حکومتی اوراپوزیشن بنچوں سے ایک دوسرے پر تندو تیزجملوں کا تبادلہ

قومی اسمبلی کا بجٹ اجلاس، ایوان مچھلی بازار بن گیا

فوٹو: فائل

اسلام آباد: آج قومی اسمبلی کا ایک اور ہنگامہ خیزاجلاس ہوا، حکومتی اوراپوزیشن بنچوں سے ایک دوسرے پر تندو تیزجملوں کا تبادلہ ہوتا رہا۔اپوزیشن نے ڈپٹی اسپیکرقاسم خان سوری پرتنقید کے نشترچلا دیئے۔حکومتی ارکان بھرپوردفاع کرتے نظرآئے۔

اسپیکراسد قیصر کا کہنا تھا کہ وہ بطوراسپیکرگارنٹی دیتے ہیں کہ ناموس رسالت قانون میں تبدیلی نہیں ہوگی۔

آج ہونے والے قومی اسمبلی کے اجلاس میں ایک طرف حکومتی ارکان دوسری جانب اپوزیشن ارکان مسلسل ہنگامہ آرائی پر آمادہ نظر آئے۔ قومی اسمبلی کے ایوان میں ایک بار پھر گرما گرمی کا ماحول دیکھنے میں آیا۔

مسلم لیگ ن کے رہنما خواجہ آصف نے وزیراعظم اورڈپٹی اسپیکر قاسم سوری پرشدید تنقید کرتے ہوئے کہا کہ یہ رویہ سارے نظام کو لپیٹ دے گا۔ ۔یہاں انصاف نہ ملا تو سپریم کورٹ جائیں گے۔

یہ بھی پڑھیں:قومی اسمبلی میں 9 آرڈیننس منظور، حزب اختلاف کا احتجاج

انہوں نے ڈپٹی اسپیکرکےخلاف تحریک عدم اعتماد کااعلان کردیا بھی ایوان کے اندرکیا۔ ،وفاقی وزیرمراد سعید نے اقامہ رکھنے پرخواجہ آصف کو خوب آڑے ہاتھوں لیا۔

اسپیکرقومی اسمبلی نے کہا کہ وہ ایوان کو قانون کے مطابق چلارہے ہیں۔۔پوری قوم جان لے ناموس رسالت قانون میں کوئی تبدیلی نہیں کی جائے گی۔اجلاس پیر کی شام 4 بجے تک ملتوی کردیا گیا۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز