آزادی مارچ کا پلان بی: ملک کی تمام تجارتی شاہراہیں کل سے بند کردی جائیں گی

آزادی مارچ کا پلان بی: ملک کی تمام تجارتی شاہراہیں کل سے بند کردی جائیں گی

اسلام آباد: پاکستان کی تمام اہم تجارتی شاہراہیں کل سے مکمل طور پر بند کردی جائیں گی۔ یہ فیصلہ جمعیت العلمائے اسلام (ف) کے اہم اجلاس میں کیا گیا۔

جے یو آئی (ف) کا پلان بی، احتجاج کا دائرہ ملک بھر میں وسیع کرنے کا امکان

ہم نیوز نے انتہائی ذمہ دار ذرائع کے حوالے سے بتایا ہے کہ اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ کل بروز بدھ  سے پلان بی پر عمل درآمد کو یقینی بنایا جائے گا۔

ذرائع کے مطابق آزادی مارچ کے لیے طے کردہ پلان اے کے تحت پشاور موڑ پر دھرنا جاری رہے گا۔ ذرائع کے مطابق جے یو آئی (ف) کے اجلاس میں طے کیا گیا کہ پلان بی پرکامیاب عمل درآمد کے بعد پشاور موڑ پر جاری آزادی مارچ مؤخر کردیا جائے گا۔

کسی دھرنے کا حصہ نہیں بنیں گے، مراد علی شاہ

ہم نیوز کو اس ضمن میں انتہائی ذمہ دار ذرائع نے بتایا ہے کہ پلان بی کے فیز ایک کے تحت ملک کی تمام اہم تجارتی شاہراہیں بند کی جائیں گی جب کہ پلان بی کے فیز ٹو کے تحت تمام ضلعی ہیڈ کوارٹرز بھی بند کردیے جائیں گے۔

ذمہ دار ذرائع کا کہنا ہے کہ اس ضمن میں تمام صوبائی عہدیداران کو پلان بی پر عمل درآمد یقینی بنانے کے لیے نہ صرف ہدایات جاری کردی گئی ہیں بلکہ اہم ٹاسک بھی تفویض کردیے گئے ہیں۔

’جے یو آئی ف کو ن لیگ اور پیپلز پارٹی کی ضرورت نہیں‘

آزادی مارچ میں جمعیت العلمائے اسلام (ف) کا ساتھ دینے والی پاکستان پیپلزپارٹی کی حکومت سندھ کے سربراہ وزیراعلیٰ سید مراد علی شاہ نے واضح طور پر کہا ہے کہ بحیثیت پارٹی ہمارا شروع دن سے مؤقف ہے کہ کسی بھی دھرنے کا حصہ نہیں بنیں گے۔

امیر جے یو آئی (ٖف) مولانا فضل الرحمان کو پاکستان مسلم لیگ (ن) بھی کہہ چکی ہے کہ وہ آزادی مارچ میں ساتھ ہے لیکن کسی بھی دھرنے کا حصہ بننے کے لیے آمادہ نہیں ہے۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز