’حکومت سزا یافتہ قیدی سے سیکیورٹی بانڈ مانگ سکتی ہے‘

اسلام آباد: پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے رہنما بابر اعوان نے کہا ہے کہ بیرون ملک جانے کے لیےحکومت سزا یافتہ قیدی سے سیکورٹی بانڈ مانگ سکتی ہے۔

اسلام آباد ہائی کورٹ کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ قانون کے مطابق اتھارٹی مشروط آرڈر جاری کرسکتی ہے، جو حکومت اجازت دے سکتی ہے وہ اس کے ساتھ شرائط بھی عائد کرسکتی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ سابق وزیراعظم نوازشریف سیکیورٹی بانڈ جمع کرانے سے انکار یا اقرار تب کریں جب وہ سودا کر رہے ہوں، ہماری حکومت تو کوئی سودا نہیں کرے گی۔

بابراعوان کا کہنا تھا کہ سپریم کورٹ نواز شریف کی اس سے قبل بیرون ملک علاج کی استدعا مسترد کر چکی ہے، اسحاق ڈار ڈیڑھ سال سے بھاگا ہوا ہے کیا وہ لندن کے علاج سے صحت مند ہو گیا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ نواز شریف بھی اگرباہر جا کر واپس نہیں آتے تو حکومت جواب دہ ہے، پھر یہی کہا جائے گا کہ عمران خان نے این آر او کیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ قیدی بھی وہ ہے جس کے دو بیٹوں سمیت متعدد رشتہ دار عدالتوں کے اشتہاری ہیں، نیب عدالتیں اور قانون ان کے اشتہاری رشتہ داروں کو ڈھونڈ رہے ہیں وہ کہتے ہیں ہم نے پیش نہیں ہونا۔

پی ٹی آئی رہنما نے کہا کہ جب نواز شریف مشرف کے دور میں گیے تو ماڈل ٹاون سمیت کٹے اور پچھڑے بھی دے کر گئے تھے،اس وقت آئین معطل تھا اور کچھ بھی کیا جا سکتا تھا۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز