سینیئر بیوروکریٹ وسیم اجمل گرفتار

سینیئر بیوروکریٹ وسیم اجمل گرفتار

فائل فوٹو

لاہور: قومی احتساب بیورو(نیب) نے سابق مینیجنگ ڈائریکٹر لاہور ویسٹ مینجمنٹ کمپنی اور سینیئر بیوروکریٹ وسیم اجمل کو حکومتی خزانے کو ایک ارب روپے کا نقصان پہنچانے کے الزام میں گرفتار کر لیا ہے۔

نیب ذرائع کے مطابق وسیم اجمل نے نجی ادارے سے خاکروب کی بھرتیوں پر ایک ارب سے زائد کی ادائیگیاں کروائیں۔ ملزم نے غیرقانونی طور پر 2014 میں میسرز البیراک نامی کمپنی کو ویسٹ مینجمنٹ کا انتہائی مہنگے داموں ٹھیکہ دیا۔

ملزم نے آپس کی ملی بھگت سے لیبر کاسٹ کی مد میں ہی 1 ارب مالیت کی رقم کنٹریکٹرز کو ادا کروائی جبکہ کنٹریکٹ کی مطابق لیبر کی مکمل رقم علیحدہ سے واپس کی جانی تھی۔ نیب کے مطابق ملزم کنٹریکٹر کو لیبر کی مد میں ایک ارب کی دہری ادائیگی میں ملوث پایا گیا ہے۔

ذرائع کے مطابق ملزم کی جانب سے جعلی رعایت(ایگزیمپشن) کے طور پہ 96 ہزار امریکی ڈالرز کی چھوٹ بھی دی گئی۔

نیب کا یہ بھی الزام ہے کہ وسیم اجمل نے اختیارات کا ناجائز استعمال کرتے ہوئے کمپنی سیکرٹری کی پوسٹ پہ غیرقانونی بھرتی میں بھی قلیدی کردار ادا کیا۔

نیب لاہور حکام کیجانب سے ملزم وسیم اجمل کو جسمانی ریمانڈ کے حصول کیلئے کل احتساب عدالت کے روبرو پیش کیا جائے گا۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز