سرکاری اداروں میں فیس بک،  یو ٹیوب اوریو ایس بی کے استعمال پر پابندی کی تجویز

سوشل میڈیا محبت یا نفرت پھیلانے میں کتنا کارگر؟

فائل فوٹو

اسلام آباد: مستقبل میں سرکاری اداروں میں فیس بک،  یو ٹیوب اوریو ایس بی کے استعمال پربھی  پابندی کی تجویز ہے،  سرکار ی افسران اور ملازم سوشل میڈیا پر پارٹ ٹائم بزنس نہیں کر سکیں گے ، اس ضمن میں وزارت آئی ٹی نے اہم قدم اٹھالیا ہے ۔ 

اس بات کا انکشاف آج قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے انفارمیشن ٹیکنالوجی کے اجلاس میں ہوا جہاں وزارت آئی ٹی کے حکام نے کمیٹی کو بریفنگ دی ۔

سرکاری حکام نے کمیٹی اراکین کو آگاہ کیا کہ سرکاری دفاتر میں بیٹھے لوگ یو ٹیوب چلا رہے ہیں،فیس بک بھی چلائی جا رہی ہیں اور یو ایس بی سے ڈیٹا گھر بھی لے جاتے ہیں۔

حکام نے کہا کہ ڈیٹا کو سینٹرلائزڈ کر کے تمام سرگرمیوں پر پابندی عائد کریں گے ۔ این آئی ٹی بی سینٹرلائزڈ ڈیٹا سسٹم کو ہوسٹ کرے گا۔

این آئی ٹی بی حکام نے کہا کہ سرکاری ملازمین مستقبل میں وٹس ایپ کا استعمال نہیں کر سکیں گے ،سرکاری ملازمین کیلئے وٹس ایپ طرز کی سروس متعارف کرائی جائے گی ، حکومت پاکستان وٹس ایپ طرز کا سرور بناِئے گی۔

یہ بھی پڑھیئے: گلوبل واٹس ایپ ہیک میں ممکنہ طور پر حکومتی افسران بھی متاثر

حکام نے کہا کہ سرکاری ملازمین دستاویز اپنے ذاتی وٹس ایپ پر شیئر نہیں کریں گے ۔ وٹس ایپ طرز کی سرکاری  سروس پر وائس میسیج ، ویڈیو اور دستاویزات بھیج سکیں گے۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز