ٹرمپ کاطالبان سے مذاکرات کی بحالی کا اعلان

نیشنل گارڈز میدان میں اتارے تو احتجاج ختم ہوا، امریکی صدر

فائل فوٹو

کابل/واشنگٹن: امریکہ کے صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے طالبان کے ساتھ مذاکرات کی بحالی کا اعلان کر دیا ہے۔

امریکی صدر نے افغانستان کا اچانک دورہ کیا اور19 گھنٹے گزارے اور اپنے افغان ہم منصب اشرف غنی سے ملاقات کی۔

امریکی صدرخصوصی طیارے پر جمعرات کی شام افغانستان کے صوبے پروان کے علاقے بگرام پہنچے تھے۔  وائٹ ہاؤس کے نیشنل سیکیورٹی (قومی سلامتی) کے مشیر رابرٹ او برائن اور سیکریٹ سروس ایجنٹس کے اہلکاروں کا مختصر گروپ بھی ان کے ہمراہ تھا۔

ڈونلڈٹرمپ نے کہا کہ افغان طالبان معاہدہ کرنا چاہتے ہیں اور میرے خیال میں وہ جنگ بندی بھی چاہتے ہیں۔ انہوں نے کہا ہم دیکھیں گے کہ کیا واقعی طالبان مذاکرات چاہتے ہیں لیکن یہ ایک حقیقی ڈیل ہونی چاہئے۔

امریکی صدر نے کہا کہ ہم افغانستان میں امریکی فوجیوں کی تعداد میں واضح کمی کریں گے۔ ٹرمپ نے تھینکس گونگ ڈے کے موقع پر افغانستان میں موجود امریکی فوجیوں سے بھی ملاقات کی۔

صدر ٹرمپ نے کہا افغانستان میں امریکی فوجیوں کی تعداد 13 ہزار سے کم کرکے 8600 کرنے کا منصوبہ ہے۔ واضح رہے کہ امریکہ کے صدر بننے کے بعد ڈونلڈ ٹرمپ کا افغانستان کا یہ پہلا دورہ ہے۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز