ملک میں 20 صوبے ہونے چاہئیں، وسیم اختر

میئر کراچی وسیم اختر—فائل فوٹو۔

کراچی: میئر کراچی اور متحدہ قومی موومنٹ (ایم کیو ایم) پاکستان کے رہنما وسیم اختر کا کہنا ہے کہ ملک میں 20 صوبے ہونے چاہئیں کیوں کہ بڑے صوبوں کا نظام ناکام ہوچکا ہے۔

شہر قائد کے عباسی شہید اسپتال میں تقریب سے خطاب میں ان کا کہنا تھا کہ شہری  مسائل کے حل کے لئے بلدیاتی نظام کا مضبوط ہونا ضروری ہے۔

انہوں نے کہا کہ کراچی میونسپل کارپوریشن (کے ایم سی) تنخواہیں مشکل سے دے پاتی ہے، ان حالات میں شہری مسائل کا خاتمہ آسان کام نہیں۔

میئر کراچی کا کہنا ہے کہ دنیا بھر میں نئے صوبے بن رہے ہیں اور ہم اب تک 72 سال پیچھے کھڑے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ بلدیاتی نظام مضبوط ہو تب ہی مسائل حل اور ملک ترقی کرے گا۔

انہوں نے کہا کہ سیوریج سمندر میں ڈال رہے ہیں اور کچرا شہر میں پڑا ہوا ہے، بین الاقوامی سطح پر یہ ٹھیک  پیغام  نہیں جا رہا۔

ان کا کہنا تھا کہ بلدیہ عظمٰی کراچی کو ماہانہ دس کروڑ روپے خسارے کا سامنا ہے، 13 ہزار ملازمین کو تنخواہ دینے کے بعد شہری مسائل حل  کرنا آسان کام نہیں ہے۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز