فریال تالپور کی درخواست ضمانت پر نیب کو نوٹس، آصف زرداری کی طبی رپورٹ طلب

آصف زرداری اور فریال تالپور کی درخواست ضمانت پر سماعت آج

فائل فوٹو

اسلام آباد: سابق صدر آصف علی زرداری کی ہمشیرہ فریال تالپور کی درخواست ضمانت پر قومی احتساب بیورو سے جواب طلب کر لیا گیا ہے۔

ہائی کورٹ کے چیف جسٹس اطہر من اللہ اور جسٹس عامر فاروق پر مشتمل بینچ نے سماعت کی۔ عدالت نے استفسار کیا کہ کیا آصف زرداری کا کوئی میڈیکل بورڈ بنا، کیا کوئی تازہ رپورٹ ہے۔

عدالت نے سابق صدر کی میڈیکل رپورٹ آئندہ سماعت پر طلب کی ہے۔

وکیل استغاثہ فاروق ایچ نائیک نے بینچ کو آگاہ کیا کہ پنجاب حکومت کہ جانب سے میڈیکل بورڈ بنایا گیا تھا۔ انہوں نے عدالت کا آگاہ کیا کہ آصف زرداری کو دل کا مرض لاحق ہے۔

چیف جسٹس نے کہا پمز کے ہیڈ کو ہدایت کر دیتے ہیں کہ میڈیکل بورڈ بنا کر رپورٹ پیش کریں۔ عدالت نے کیس کی سماعت 11 دسمبر تک ملتوی کر دی ہے۔

آصف علی زرداری نے منی لانڈرنگ اور پارک لین کیس میں طبی بنیادوں پر ضمانت کی اپیل کی ہے۔ فریال تالپور کی ضمانت بعد از گرفتاری کی درخواست بھی آج سنی جائے گی۔

سابق صدر نے درخواستوں میں موقف اپنایا کہ ٹرائل مکمل ہونے تک درخواست ضمانت منظور کی جائے۔

فریال تالپور نے منی لانڈرنگ کے کیس میں ضمانت کیلئے دائر درخواست میں مؤقف اپنایا کہ میں اسپیشل بچی کی والدہ ہوں، اس کی دیکھ بھال کے لیے ضمانت منظور کی جائے۔

خیال رہے کہ قومی احتساب بیورو نے عبوری ضمانت مسترد ہونے پر آصف علی زرداری کو 10 جون اور فریال تالپور کو 14 جون 2019 کو حراست میں لیا تھا۔

فریال تالپور پر بے نامی اکاؤنٹس کے ذریعے منی لانڈرنگ میں معاونت کا الزام ہے جب کہ آصف علی زرداری پر منی لانڈرنگ اور پارک لین کمپنی کے ذریعے قومی خزانے کو نقصان پہنچانے کا الزام ہے۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز