دعا منگی اغوا کیس: لڑکی کے ساتھ موجود نوجوان نے بیان ریکارڈ کرادیا

کراچی میں لڑکی دعا منگی کے اغوا کے معاملے پر واقعے میں زخمی ہونے والے نوجوان حارث فتح نے ابتدائی بیان ریکارڈ کرادیا ہے۔

تفتیشی ذرائع کے مطابق زخمی حارث نے پولیس کی جانب سے دکھائی گئی سی سی ٹی وی میں گاڑی کوشناخت کرلیا۔

انہوں نے حارث سے تحریری سوالنامے میں پوچھا کہ اغوا کاروں کی تعداد کتنی تھی؟ جس کے جواب میں نوجوان کا کہنا تھا کہ ان کی تعداد چار سے پانچ تھی۔

ذرائع نے بتایا کہ اس بات کا تعین نہیں ہوسکتا کہ حملہ اور اغوا کرنے والے کون تھے۔

ذرائع کا مزید کہنا تھا کہ ڈاکٹرز نے بہت مختصر وقت کے لئے تفتیش کاروں کو حارث سے ملنے کی اجازت دی۔

خیال رہے کہ ڈیفنس کے علاقے بڑا بخاری میں واقع اوپن ایئر ریسٹورنٹ سے اغوا ہونے والی طالبہ دعا نثار منگی کیس میں پولیس نے کچھ روز قبل 22 افراد کے بیانات قلم بند کیے تھے۔

دعا منگی کو رات گئے چار مسلح افراد نے بڑا بخاری میں واقع ’’ماسٹر چائے‘‘ کے باہر سے اسلحہ کے زور پر اغوا کیا گیا تھا۔

مسلح افراد نے دعا کے ساتھ موجود لڑکے حارث فتح کو گولی ماری تھی جس کے بعد اسے شدید زخمی حالت میں اسپتال منتقل کیا گیا تھا۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز