فردوس عاشق اعوان، فروغ نسیم، اٹارنی جنرل انور منصور خان و دیگر کے خلاف درخواست دائر

اسلام آباد: سابق صدر پرویز مشرف کے خلاف خصوصی عدالت کے فیصلے پر پریس کانفرنس کرنے پر معاون خصوصی فردوس عاشق اعوان، وزیر قانون فروغ نسیم، اٹارنی جنرل انور منصور خان و دیگر کے خلاف سپریم کورٹ میں درخواست دائر کردی گئی ہے۔

درخواست میں میڈیا چینلز کو بھی فریق بنایا گیا ہے۔

درخواست میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ  17 اور 18 دسمبر کو فریقین نے  نہ صرف عدالت کا تمسخر اڑایا بلکہ فاضل جج کی بھی تضحیک کی اور ان کے خلاف نفرت انگیز بیانات دیے۔

درخواست گزار کا کہنا ہے کہ توہین عدالت کے مرتکب افراد عوامی عہدوں پر فائز ہیں اور حکومت کی نمائندگی کر رہےہیں۔ عدالت ان تمام افراد کے خلاف آئین کے آرٹیکل 204 اور توہین عدالت کے تحت کارروائی کرے۔ ان افراد کو عوامی عہدوں کے لیے نااہل قرار دیا جائے۔

درخواست میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ قانون کے تحت کسی بھی شخص کو جج کو متنازعہ کرنے یا فیصلے کی بنیاد پر تضحیک کرنے اختیار نہیں ہے۔ فریقین نے فیصلہ دینے والے جج اور عدلیہ کی آزادی پر شدید قسم کا حملہ کیا۔

درخواست کا کہنا ہے کہ فریقین نے نامعلوم وجوہات کی بنا پر اداروں کو لڑانے اور بحران پیدا کرنے کی مذموم کوشش کی۔ حکومتی افراد کی جانب سے مفرور مجرم کی حمایت کرنا خلاف قانون ہے۔

متعلقہ خبریں