2019 کے دوران نیب لاہور کی کارکردگی کیا رہی؟ چشم کشا رپورٹ جاری

لاہور: قومی احتساب بیورو (نیب) لاہور نے سال 2019 میں بدعنوانی میں ملوث 138 ملزمان گرفتار کر لیے اور مجموعی طور پر 29 ارب 93 کروڑ کی ریکوری کی۔

اس حوالے سے  نیب لاہور نے سال 2019 کی اپنی کار کردگی رپورٹ جاری کردی ہے۔

نیب لاہور کے اعلامیے کے مطابق رواں سال کے دوران 100 نئی انکوائریوں کا آغاز کیا گیا۔ رواں سال نئی شروع ہونیوالی انویسٹی گیشنز کی تعداد 36 رہی اور مجموعی طور پر 55 ریفرنسز احتساب عدالتوں میں دائر کیے۔

کارکردگی رپورٹ کے مطابق نیب لاہور نے کرپشن کیسز میں تحقیقات مکمل کرتے ہوئے 25 ریفرنسز احتساب عدالتوں میں داخل کیے۔ نیب لاہور کیجانب سے پلی بارگین کے 30 ریفرنس احتساب عدالتوں میں داخل کیے گئے۔

نیب لاہور نے سال 2019 کے دوران کم وبیش 3 ارب روپے کیش کی صورت میں متاثرین کو واپس لوٹا دیے۔ 27 ارب روپے سے زائد مالیت کے مکانات و پلاٹ بھی متاثرین کے حوالے کیے گئے۔

اعلامیے کے مطابق ماضی میں نیب لاہور کو اوسطً سالانہ 4 ہزار شکایات موصول ہوتی رہیں، تاہم 2019 کے دوران نیب لاہور کو 13 ہزار سے زائد شکایات موصول ہوئیں۔

رپورٹ کے اجراء کے دوران ڈی جی نیب لاہور شہزاد سلیم کا کہنا تھا کہ نیب ‘احتساب سب کیلئے’ کی پالیسی پر سختی سے گامزن ہے۔

انہوں نے کہا کہ بے لاگ احتساب کیلئے چیئرمین نیب کی اختیار کردہ پالیسی کے واضع اور مثبت نتائج برآمد ہو رہے ہیں۔ ملک سے بدعنوانی کا خاتمہ اور کرپشن فری ماحول کا قیام نیب کی اولین ترجیع ہے۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز