آرمی ایکٹ ترمیمی بل کی حمایت نہیں کریں گے، مولانا فضل الرحمان

مولانا فضل الرحمان کے بیرون ملک رابطے

فائل فوٹو

اسلام آباد: جمعیت علمائے اسلام ف(جے یو آئی) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے کہا ہے کہ ہماری جماعت کا موقف وضاحت کے ساتھ سامنے آچکا ہے کہ آرمی ایکٹ ترمیمی بل کی حمایت نہیں کریں گے۔

میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ حکومت نے فوج اور جنرل باجوہ کو متنازعہ بنانے اور عدالت میں گھسیٹنے سے صورتحال متنازعہ بنائی ہے، ہم فوج کو سیاست میں ملوث نہیں کرنا چاہتے۔

انہوں نے کہا کہ عدالت میں معاملہ جانے سے معلوم ہوا کہ قانون میں سقم تھا جس کو دور کرنے کے لئے حکومت نے نااہلی کا ثبوت دیا۔

مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ آرمی چیف کی مدت ملازمت میں توسیع کا معاملہ اسمبلی میں آرہا ہے جس کو تمام حزب اختلاف جماعتیں جعلی مانتی ہیں جبکہ جے یو آئی ف اس اسمبلی کے قانون سازی کے حق کو تسلیم نہیں کرتی۔

ان کا کہنا تھا کہ حکومت نے مسودہ قانون کے متن پر حزب اختلاف سے بات نہیں کی، مسودہ قانون پر بھی کچھ ابہام موجود ہیں۔

انہوں نے کہا کہ آرمی ایکٹ پر شہباز شریف سے رابطہ ہوا ہے انہیں کہا کہ آپ کی جماعت نے اس معاملے پر اپوزیشن جماعتوں سے مشاورت نہیں کی، جس پر انہوں نے کہا کہ ہماری جماعت آپ سے رابطہ کرے گی لیکن تاحال کسی نے رابطہ نہیں کیا۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز