ن لیگ اور پیپلزپارٹی آزادی مارچ میں ساتھ دیتے تو حکومت گر سکتی تھی، محمود اچکزئی

ن لیگ اور پیپلزپارٹی آزادی مارچ میں ساتھ دیتے تو حکومت گر سکتی تھی، محمود اچکزئی

کوئٹہ :  پشتونخوا ملی عوامی کے چیئرمین محمود خان اچکزئی نے کہا ہے کہ اگر مسلم لیگ (ن) اور پیپلزپارٹی آزادی مارچ میں ساتھ دیتے تو حکومت گر سکتی تھی۔

کوئٹہ پریس کلب میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے انہوں نے مطالبہ کیا کہ ملک اور خطے کی سلامتی کو درپیش چیلنجز سے نمٹنے کے لیے مارچ یا اپریل میں نئے شفاف انتخابات کرائے جائیں۔

محمود اچکزئی نے کہا کہ 1973 کے آئین کے آرٹیکل 6 کے تحت آئین سے غداری کی سزا موجود ہے، اس لیے خصوصی عدالت کا پرویز مشرف کو سزا دینے کا فیصلہ بالکل درست ہے۔

مزید پڑھیں : سنگین غداری کیس: عدالت کا پرویز مشرف کو گرفتار کرنے کا حکم

انہوں نے کہا کہ مصلحت پسندی کے بجائے غیرجانبدارانہ انتخابات کے ذریعے پاکستان کی تشکیل نو کی ضرورت ہے،  اگر ہم سڑکوں پر نکلے تو حکمرانی کرنا مشکل ہو جائے گا۔

پشتونخوا ملی عوامی کے سربراہ نے کہا کہ ایکسٹنشن کا معاملہ ہمیشہ کے لیے تمام اداروں میں ختم ہونا چاہیے، جس کی مدت پوری ہو وہ گھر چلا جائے۔

یہ بھی پڑھیں : مولانا فضل الرحمان نے اچکزئی سے مدد مانگ لی

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز