اسپتال میں بچے کی ہلاکت، انتظامیہ نے والدین کو ذمہ دار ٹھہرا دیا

اسلام آباد: وفاقی دارلحکومت کے پمز اسپتال انتظامیہ نے چار دن قبل ہلاک ہونے والے بچے  کی موت کا ذمہ دار والدین کو قرار دیا ہے۔

ایگزیکٹو ڈائریکٹر پمز ڈاکٹر انصر مسعود کے مطابق بچے کی ہلاکت کے معاملے پر تحقیقات کی گئی ہیں۔ ایک سالہ فیضان کو والدین نے اسپتال لانے میں دیر کردی۔ متعلقہ شعبے نے بچے کی جان بچانے کی پوری کوشش کی۔

ڈاکٹر انصر مسعود کے مطابق بچے کی ہلاکت کے بعد شعبے کے سرجن اور عملے سے پوچھ گچھ کی گئی۔ بچے کو جب اسپتال لایا گیا تو ہیموگلوبن کی مقدار دو گرام تھی۔ عمومی طور پر بچے میں ہیموگلوبن کی مقدار 14 سے 15 گرام ہوتی ہے۔

ایگزیکٹو ڈائریکٹر پمز کے مطابق خون کا بندوبست ہونے تک بچہ دم توڑ چکا تھا۔ ویڈیو کے ذریعے سوشل میڈیا پر گمرہ کیا جا رہا ہے۔ ویڈیو میں والدین کی جانب سے دیا گیا موقف درست نہیں ہے۔

ڈاکٹر انصر مسعود نے کہا کہ بچے کی ہلاکت کے معاملے پر مزید تحقیقات کی ضرورت نہیں ہے۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز