برطانوی اخبار کیخلاف کیس میں عمران خان کو فریق بنانا خارج از امکان نہیں، ن لیگ

اسلام آباد: مسلم لیگ(ن) کے ڈپٹی سیکرٹری جنرل عطا تارڑ نے انکشاف کیا ہے کہ ڈیلی میل کیس میں وزیر اعظم عمران اور شہزاد اکبر کو بھی پارٹی بنایا جا سکتا ہے۔

پروگرام پاکستان ٹونائٹ میں میزبان ثمر عباس سے گفتگو کرتے ہوئے مسلم لیگ (ن) رہنما عطاتارڈ کا کہنا تھا کہ ابھی دائرہ کار کا مسئلہ تھا وزیر اعظم اور شہزاد اکبر پاکستانی شہری ہیں ۔ یہ حقیقت ہے کہ ڈیوڈ روز کو جیل میں بندوں تک رسائی دی گئی خارج از امکان نہیں کہ دونوں کو پارٹی بنایا جائے۔

ان کا کہنا تھا ن لیگ اپنی وکلا ٹیم کے ساتھ مشاورت کرے گی جس کے بعد وزیراعظم عمران خان اور مشیر برائے احتساب کو بھی پارٹی بنایا جا سکتا ہے

چوہدری شوگر مل معاملے پر مسلم لیگ (ن) کے ڈپٹی سیکرٹری جنرل عطاتارڑ نے شہزاد اکبر کو چیلنج دیا کہ کسی عدالت میں نہیں ٹاک شو پر ہی آکر ثابت کردیں کہ اسلام آباد ائیر پورٹ کے ٹھیکے کے پیسے چوہدری شوگر مل گئے تو میں ن لیگ کا دفاع کرنا چھوڑ دوں گا اور پارٹی سے استعفی دے دوں گا، اور اگر نہ کرسکے تو شہزاد اکبر استعفی دیں۔

دوسری جانب شہزاد اکبر نے کہا ہے کہ شہباز شریف نے لندن کی عدالت میں مقدمہ درج کرکے حکومت کو سنہری موقع فراہم کیا ہے کہ اور اب بات ڈیوڈ روز کی خبر سے بہت آگے جائے گی۔

 

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز