کامونکی: رکشہ ڈرائیور نے نرسری جماعت کی طالبہ کو زیادتی کا نشانہ بنا دیا

کامونکی: رکشہ ڈرائیور نے نرسری جماعت کی طالبہ کو زیادتی کا نشانہ بنا دیا

کامونکی: درندہ صفت رکشہ ڈرائیور نے انتہائی کمسن و معصوم بچی کو زیادتی کا نشانہ بنانے کے بعد گھر کے باہر پھینک دیا۔ پولیس نے فوری طور پر کارروائی کرتے ہوئے ملزم کو گرفتار کرلیا ہے۔

پولیس نے چونیاں میں بچوں کا قاتل کیسے پکڑا؟ تفصیلات سامنے آ گئیں

ہم نیوز کے مطابق صوبہ پنجاب کے شہر کامونکی کے علاقے تتلے عالی میں رکشہ ڈرائیور نے نرسری جماعت کی کمسن طالبہ حرم فاطمہ کو زیادتی کا نشانہ بنایا اور حالت غیر ہونے پر گھر کے باہر پھینک دیا۔

علاقہ پولیس نے ابتدائی تفتیش کے بعد ہم نیوز کو بتایا ہے کہ گلزار نامی رکشہ ڈرائیور کمسن حرم فاطمہ کو اسکول سے چھٹی کے بعد رکشہ کے بجائے موٹر سائیکل پہ لے کر گیا اور ایک خالی دکان میں معصوم بچی کو زیادتی کا نشانہ بنایا۔

ہم نیوز کو علاقہ پولیس نے بتایا کہ اطلاع ملتے ہی فوری طور پر کارروائی کی گئی اور مبینہ ملزم گلزار کو گرفتارکرلیا گیا جس نے پوچھ گوچھ کے دوران اپنے گھناؤنے جرم کا اعتراف کرلیا۔

’بچوں کے ساتھ زیادتی کے واقعات میں اضافے کا سبب انصاف کی بروقت عدم فراہمی ہے‘

علاقہ پولیس کے مطابق حرم فاطمہ کے اہل خانہ کی جانب سے باضابطہ طور پر ملنے والی درخواست پر اوباش رکشہ ڈرائیور گلزار کے خلاف مقدمہ درج کیا جائے گا۔

متعلقہ خبریں