جنگلی جانور پالنے کا کیس: رابی پیرزادہ کو بری کرنے کا حکم جاری

رابی پیرزادہ کے وارنٹ گرفتاری جاری

لاہور: مگر مچھ اور سانپ پالنے کے کیس میں عدالت نے گلوکارہ رابی پیرزادہ کو بری کرنے کا حکم جاری کردیا۔

ماڈل ٹاؤن کہچری میں جوڈیشل مجسٹریٹ حارث صدیقی نے سانپ اور مگر مچھ رکھنے سے متعلق کیس میں بریت کی درخواست پر سماعت کی جس کے دوران رابی پیرزادہ پیش ہوئیں۔

گلوکارہ کے وکیل نے مؤقف اختیار کیا کہ رابی پیرزادہ کا اس مقدمہ میں کوئی کردار نہیں، وائلڈ لائف نے ذاتی رنجش کی بنیاد پر گلوکارہ کو کیس میں ملوث کیا۔

رابی پیرزادہ نے عدالت میں بیان دیا کہ وہ قانون کی حکمرانی پر یقین رکھتی ہیں۔

مزید پڑھیں: اژدھے، مگر مچھ اورسانپ رکھنے پرگلوکارہ رابی پیر زادہ کا چالان

عدالت نے دلائل مکمل ہونے پر فیصلہ محفوظ کر لیا اور کچھ دیر بعد رابی پیرزادہ کو مقدمہ سے بری کرنے کا حکم سنایا۔

عدالت کے باہر میڈیا سے گفتگو میں رابی پیرزادہ نے کہا اگر وائلڈ لائف چاہے تو وہ ان کے ساتھ  مل کر لوگوں میں آگاہی کے لیے کام کرنے کو تیار ہیں۔

محکمہ وائلڈ لائف نے گزشتہ سال گیارہ ستمبر کو غیر قانونی طور پر اژدھا، مگرمچھ اور سانپ رکھنے کے الزام پر گلوکارہ کا چالان کیا تھا۔

خیال رہے کہ 13 ستمبر 2019 کو غیر قانونی طور پر سانپ رکھنے کے الزام میں اداکارہ کے خلاف  محکمہ جنگلی حیات نے کارروائی کرتے ہوئے ان کے خلاف چالان  مقامی عدالت میں پیش کردیا تھا۔

مزید پڑھیں: مگر مچھ، اژدھا رکھنے کا الزام: رابی پیرزادہ کے وارنٹ منسوخ

محکمہ جنگلی حیات پنجاب نے رابی پیرزادہ پر الزام عائد کیاہے کہ انہوں نے  مگر مچھ، سانپ اور دیگر ریپٹائلز رکھے ہوئے ہیں جوکہ  وائلڈلائف ایکٹ کی خلاف ورزی ہے۔  تاہم گلوکارہ رابی محکمہ جنگلات کی جانب سے لگائے گئے ان الزامات کی تردید کررہی ہیں۔

محکمہ وائلڈ لائف حکام نے 11 ستمبر کو اداکارہ کا چالان کیا تھا، ان پر غیر قانونی طور پر اژدھا، مگرمچھ اور سانپ رکھنے کا الزام  تھا۔ محکمہ وائلڈ لائف نے اداکارہ کی اژدھا اور مگرمچھ کے ساتھ ویڈیو اور تصاویر دیکھ کر چالان کیا تھا۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز