آپریشن ردالفساد کے تین سال: ایک لاکھ 49 ہزار سے زائد انٹیلی جینس آپریشنز

آپریشن ردالفساد کے تین سال: ایک لاکھ 49 ہزار سے زائد انٹیلی جینس آپریشنز

اسلام آباد: ملک بھر میں آپریشن ردالفساد کے تحت ایک لاکھ 49 ہزار سے زائد انٹیلی جینس آپریشنز کیے گئے. انسداد دہشتگردی کی جنگ میں 2001 سے 2020 تک صرف کراچی میں 350 سے زائد بڑے اور 850 سے زائد معمول کے آپریشنز ہوئے۔

امریکی غلطی ہے کہ وہ پاکستان کے لیے پالیسیاں بدلتا رہا، سینیٹر گراہم

دہشت گردی کے خلاف سیکورٹی فورسز اورعوام کی مشترکہ جدوجہد کے آپریشن ردالفساد کے تین سال مکمل 22 فروری کو مکمل ہوئے ہیں۔

اعداد و شمار کے مطابق شہر قائد کراچی کی روشنیاں بحال ہوئیں اور جرائم کی عالمی درجہ بندی میں شہر چھ سے 91 ویں نمبر پر آگیا۔آپریشن ردالفساد کے تحت 22 فروری 2017 سے 2020 تک کل تین ہزار 800 سے زائد خطرات کے انتباہ جاری ہوئے۔

ہم نیوز کے مطابق گزرے سالوں میں سیکیورٹی فورسز اور انٹیلی جینس اداروں نے دہشتگردوں کے 400 سے زائد مذموم منصوبے ناکام بنائے جب کہ فوجی عدالتوں نے 344 دہشتگردوں کو سزائے موت دی، 301 کو مختلف دورانیے کی سزائیں سنائیں جب کہ پانچ کو بری کیا۔

اسی آپریشن کے دوران پاک، افغان سرحد پر 2611 کلومیٹر میں سے 1450 کلومیٹر پر باڑ کی تنصیب مکمل کر لی گئی ہے جب کہ سرحدی باڑ کے ساتھ 843 حفاظتی قلعوں میں سے 343 مکمل ہوچکی ہیں اور 161 زیر تعمیر ہیں۔

اعداد و شمار کے مطابق بھارتی قابض فورسز 2017 سے فائر بندی کی آٹھ ہزار سے زائد مرتبہ خلاف ورزیاں کر چکی ہیں۔

کسی اور کی جنگ دوبارہ نہیں لڑیں گے، ترجمان پاک فوج

ہم نیوز کے مطابق پاکستان جو دہشتگردی کے مکمل خاتمے اور دیرپا امن و استحکام کے لیے عزم مصمم رکھتا ہے، میں کھیل، سیاحت، کھلاڑی اورغیر ملکی سب واپس آنے لگے ہیں۔

پاکستان میں بدھ مت، ہندو اور سکھ مذاہب کے پیروکاروں کی جوق در جوق آمد بھی امن کا پیام ہے جب کہ کبڈی ورلڈ کپ اور سری لنکا و بنگلہ دیش کی کرکٹ ٹیموں کی آمد نے ثابت کیا ہے کہ پاکستان امن کا دیس ہے۔

ہم نیوز کےی مطابق ملک میں آپریشن ردالفساد کی بدولت طویل عرصے کے بعد پاکستان سپر لیگ کا انعقاد ہوا ہے اور عالمی سطح پرانسداد دہشت گردی کی جنگ میں پاکستانی کاوش و کامیابی کو سراہا گیا ہے۔

برٹش ایئرویز کو پاکستان پروازوں کی بحالی پر خوشی ہے، برطانیہ

امریکہ اور برطانیہ نے اپنے شہریوں کے لیے  پاکستان کو محفوظ قرار دیتے ہوئے سفری انتباہ نرم کردیا ہے تو برٹش ائیر ویز نے دس سال بعد پاکستان کے لیے اپنی پروازیں شروع  کی ہیں۔ اس کے علاوہ بھی نئی ایئرلائن نے پاکستان کا رخ کیا ہے۔

اقوام متحدہ ن اسلام آباد کو فیملی اسٹیشن قرار دے کر وفاقی دارالحکومت کو سب سے پرامن شہر تسلیم کیا ہے۔ اقوام متحدہ سیکرٹری جنرل انتونیو گوئترس نے بھی برملا پاکستان کی امن کاوش کی تعریف کی ہے۔

امریکی سینیٹر جان مکین اور لنزے گراہم بھی پاکستانی کاوش کے معترف رہے ہیں۔  سابق برطانوی چیف آف جنرل اسٹاف جنرل نکولس کارٹر اور برطانوی سفارتکاروں نے اس پاکستانی کردار کو سراہا ہے جو وہ قیام امن میں ادا کررہا ہے۔

آپریشن ردالفساد کے تحت ملک بھر میں کارروائیاں

ہم نیوز کے مطابق پاکستان کو امن کے رستے پر گامزن کرنے اور عالمی سطح پراس کا احساس و ادراک دلانے میں چیف آف آرمی اسٹاف کا کلیدی کردار ہے جو انہوں نے عسکری و سفارتی محاذوں پہ ادا کیا ہے۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز