’ایک کروڑ نوکریاں، پچاس لاکھ گھر کی خیالی عمارت زمین بوس ہوگئی‘

پی ٹی آئی اور پی ڈی ایم کے درمیان صرف اقتدار کا اختلاف ہے، سراج الحق

لاہور: امیر جماعت اسلام سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ وزیراعظم عمران خان کی ایک کروڑ نوکریاں اور پچاس لاکھ گھر دینے کے وعدوں کی خیالی عمارت زمین بوس ہوگئی ہے۔

لاہور سے جاری اپنے ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ حکومت پہلے دن سے ہی وژن کے بحران کا شکار ہے۔ پہلے سے آزمائے ہوئے ٹولے نے ملک کو بحرانوں کی آماجگاہ بنا دیا ہے۔

سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ وزیراعظم کو 22 کروڑ عوام کی نہیں اپنے کچھ پیاروں کے مفادات کی فکر ہے۔

انہوں نے کہا کہ وزیراعظم آٹے ، چینی کا بحران پید اکرنے والوں کو جانتے ہیں تو پھر اب کمیٹیاں بنانے کی کیا ضرورت ہے۔ وزیر اعظم کو واقعی احتساب میں دلچسپی ہوتی تو سب سے پہلے اپنے آپ کو اور وزراءکو احتساب کیلئے پیش کرتے۔

مزید پڑھیں: حکومت نے پانچ سال پورے کیے تو پھر یہی رہے گی عوام نہیں ہوں گے، سراج الحق

سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ جب تک خوف خدا رکھنے والی دیانتدار قیادت برسراقتدار نہیں آتی ملک کے مسائل حل نہیں ہونگے۔ 72 سال میں ایک بار بھی اسلام کے عادلانہ نظام کو نہیں آزمایا گیا۔

انہوں نے کہا کہ ملک میں مہنگائی کے برسوں پرانے ریکارڈ ٹوٹ گئے ہیں۔ گیس، بجلی اور تیل کی قیمتوں میں ہوشربا اضافے سے مہنگائی آسمان پر پہنچ گئی ہے۔

سینیٹر سراج الحق نے مطالبہ کیا کہ مہنگائی کو کنٹرول کرنے اور اشیائے خورد و نوش کی قیمتوں میں کمی لانے کیلئے گیس، بجلی اور تیل کی قیمتیں کم کی جائیں۔

خیل رہے کہ گزشتہ روز چارسدہ میں عوامی جلسے سے خطاب کرتے ہوئے سینیٹر سراج الحق نے کہا تھا کہ ان کی جماعت جلد پاکستان تحریک انصاف کی پالیسیوں کے خلاف جلد تحریک شروع کرے گی۔

مزید پڑھیں: مہنگائی کی شرح میں بتدریج کمی آنا شروع، ادارہ شماریات

چارسدہ میں دستاربندی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا تھا کہ پچھلے 18 ماہ میں حکومت نے کوئی وعدہ پورا نہیں کیا۔عالمی مالیاتی ادارے (آئی ایم ایف) کی ایماء پر قیمتوں کا تعین قوم سے زیادتی ہے۔

سینیٹر سراج الحق نے کہا تھا کہ ریاست مدینہ کے دعویداروں کے دور میں سودی نظام مزید پروان چڑھا۔ روزگار دینے کے بجائے 22 لاکھ شہری بے روزگار کیے گئے۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز