سعودی عرب: اقامے کی مدت میں بغیر فیس3ماہ کی توسیع

فوٹو: فائل

جدہ : سعودی عرب میں محکمہ پاسپورٹ نے اعلان کیا ہے کہ مقیم غیر ملکیوں کے اقامے کی مدت میں کسی فیس کے بغیرخود بخود تین ماہ کے لیے توسیع کردی جائے گی جس پر عمل شروع کر دیا گیا ہے

کورونا وائرس کی وبا کے بعد مملکت میں جاری کرفیو اور لاک ڈاون کی وجہ سے سعودی حکومت نے غیر ملکیوں کے اقاموں میں توسیع کا اعلان کیا تھا جس کے حوالے سے سعودی محکمہ پاسپورٹ نے ایک بیان میں کہا ہے کہ اس فیصلے کا اطلاق نجی شعبے کےغیر ملکی کارکنان پر ہوگا جن کےاقامےکی معیاد ختم ہوچکی ہے یا اٹھارہ مارچ کے بعد اور تیس جون تک ختم ہوگی۔

حکام کی طرف سے کہا گیاہے کہ چاہے وہ مملکت میں موجود ہیں یا نہیں۔ایسے تمام غیر ملکیوں کو انفرادی طور پرٹیکسٹ میسج کے ذریعے اقامے کی توسیع کےبارے میں مطلع کیا جائے گا۔بیان کے مطابق یہ اقدام سعودی حکومت کی طرف سے کورونا وائرس کے باعث مالی اور معاشی رکاوٹ کو دور کرنے کی تازہ ترین کوشش ہے۔یاد رہے کہ سعودی حکومت نے نجی اداروں اور اقتصادی سرگرمیوں پر نئے کورونا وائرس سے پڑنے والے نقصانات کا بوجھ کم کرنے کے لیے کئی اہم اقدامات کا اعلان کیا تھا۔

نئے کورونا وائرس کے نقصانات سے بچانے کے لیے کئی ہنگامی پروگرام ، سکیمیں اور اقدامات طے کیے گئے تھے۔

تمام اقامہ ہولڈرز کو سعودی عرب واپسی کیلئے 72 گھنٹے کا نوٹس

جس میں کہا گیا تھا کہ  ایسے غیر ملکی کارکن جن کے اقاموں کی میعاد ختم ہوگئی ہو ان کے اقاموں میں تین ماہ کی توسیع کسی اضافی فیس کے بغیر کر دی جائے گی۔ توسیع 30 جون 2020 تک کے لیے ہوگی۔

متعلقہ خبریں