کورونا وائرس، آئندہ برس بھی اولمپکس کا انعقاد کھٹائی میں پڑنے کا امکان

کورونا وائرس، آئندہ برس بھی اولمپکس کا انعقاد کھٹائی میں پڑنے کا امکان

ٹوکیو: جاپان میڈیکل ایسوسی ایشن کے سربراہ یوشیتکے یوکوکورا نے خبردار کیا ہے کہ اگر کورونا وائرس کی ویکسین دریافت نہیں کی جاتی تو اگلے سال بھی اولمپکس کا انعقاد مشکل ہو گا۔

یوکوکورا کا کہنا تھا وہ  یہ نہیں کہہ رہے کہ جاپان کو اولمپکس کی میزبانی کرنی چاہئے یا نہیں، لیکن ایسا کرنا مشکل ہوگا۔

کورونا کے پیش نظر اولمپکس کھیلوں کو 2021 تک کے لیے ملتوی کردیا گیا تھا تاہم اولمپکس کی نئی تاریخ پر ماہرین نے شبہات کا اظہار کیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں: کورونا کا ایک اور وار، ٹوکیو اولمپکس 2020 ملتوی

خیال رہے کہ چین کے شہر ووہان سے پھوٹنے والی وبا کورونا وائرس کے باعث جاپان میں ہونے والا بین الاقوامی ملٹی اسپورٹس ایونٹ ٹوکیو اولمپکس 2020 ملتوی کر دیا گیا تھا۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق ٹوکیو اولمپکس کا انعقاد جاپان میں رواں برس 24 جولائی سے 9 اگست تک کیا جانا تھا جس کے لیے جاپان میں بڑے پیمانے پر انتظامات بھی کیے جا رہے تھے۔

خیال رہے کہ  کینیڈا نے ٹوکیواولمپکس کے لیے اپنی ٹیم نہ بھیجنے کا اعلان کیا تھا جبکہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے بھی  کورونا کے پیش نظر اولیمپکس معطل کرنے کی تجویز دی تھی۔

واضح رہے کہ پہلی اور دوسری جنگ عظیم کے سوا اولمپک مقابلے ہر چار سال بعد باقاعدگی سے منعقد ہوتے رہے ہیں اور اب تک افریقہ کے سوا ہر برِاعظم کو اس کی میزبانی کا موقع مل چکا ہے حالانکہ اولمپک کے پرچم پر موجود پانچ دائرے انہی براعظموں کی نشاندہی کرتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں: کورونا وائرس، ٹوکیو اولمپکس خطرے میں پڑ گئے

جنگ عظیم کے باعث 1916ء، 1940ء اور 1944ء کے مقابلے منسوخ کردیے گئے تھے جبکہ سرد جنگ کے باعث بڑے پیمانے پر بائیکاٹ کے نتیجے میں 1980ء اور 1984ء کے مقابلوں میں شرکت محدود رہی۔

اولمپکس ہر دو سال میں گمنام کھلاڑیوں کو قومی اور بین الاقوامی سطح پر مشہور ہونے اور خود کو منوانے کا موقع فراہم کرتے ہیں۔ اس کے علاوہ یہ مقابلے میزبان شہر، ملک اور قوم کے لیے خود کو دنیا بھر کے سامنے پیش کرنے کا موقع بھی ہوتے ہیں۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز