کورونا: محکمہ صحت سندھ کے ملازمین کی اتوار کی چھٹی ختم

کراچی: کورونا کے خدشے کے پیش نظر محکمہ صحت سندھ نے افسران اور ملازمین کی اتوار کی چھٹی ختم کردی ہے۔

محکمہ صحت سندھ نے تمام افسران اور ملازمیں کو اتوار کے روز دفاتر آنے کی ہدایت کردی۔

صوبائی حکومت نے کہ افسران اور ملازمین کوصبح 10 بجے سے شام 4 بجے تک دفاتر میں موجود رہنے کی ہدایت کردی۔

ذرائع کے مطابق احکامات کورونا وائرس کی موجودہ صورتحال کے تناظر میں دیے گئے ہیں۔

آج کراچی میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے  وزیر اعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے کہا کہ سندھ کی تاریخ میں پہلی مرتبہ 24 گھنٹوں میں سب سے زیادہ ایک ہزار 80 نئے کیسز رپورٹ ہوئے ہیں۔

وزیر اعلیٰ سندھ نے کورونا سے متعلق بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ سندھ میں کورونا کے مریضوں کی تعداد 10 ہزار 771 ہو گئی ہے جبکہ آج کورونا کے 4 مریض انتقال کر گئے، اس طرح انتقال کر جانے والوں کی مجموعی تعداد 180 ہو گئی ہے۔

انہوں نے کہا کہ ہم نے 5 ہزار 498 ٹیسٹ کیے جس میں سے 20 فیصد یعنی 1080 کیسز مثبت آئے۔

مزید پڑھیں: پاکستان میں کورونا 618 جانیں نگل گیا، 27,474 متاثر

مراد علی شاہ نے کہا کہ کراچی میں ایک دن میں 583 کورونا کیس رپورٹ ہوئے جبکہ کراچی میں کورونا کے مریضوں کی تعداد 8 ہزار کے قریب پہنچ چکی ہے۔

انہوں نے کہا کہ کراچی کے ضلع جنوبی میں 143، ملیر میں 133، ضلع شرقی میں کورونا کے 113 نئے کیسز سامنے آئے جبکہ ضلع وسطی 78، کورنگی 61 اور ضلع غربی میں 55 کیسز رپورٹ ہوئے۔

وزیر اعلیٰ سندھ نے کہا کہ خیرپور کے پیر جو گوٹھ میں 246 کیسز مثبت آئے جس کے بعد لاک ڈاؤن سخت کرنے کی ہدایت کر دی ہے۔ سندھ کی صورتحال دیکھ کر شدید پریشان ہوں۔ ہمیں خود پر بھی رحم کرنا ہو گا۔

انہوں نے کہا کہ سندھ میں کورونا کیسز میں تیزی سے اضافہ ہو رہا ہے اور ہمیں مزید احتیاط کی ضرورت ہے۔

سید مراد علی شاہ نے کہا کہ ہم لاک ڈاوَن کی فیز ٹو میں داخل ہو گئے ہیں اور اب ہمیں کورونا سے بچاوَ والی ایس او پیز پر عمل کرنا ہوگا۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز