’ شہبازشریف جن فرشتوں کو کروڑوں روپے کا دودھ بیچتے تھے وہ سامنے آ چکے ‘


اسلام آباد: وزیراعظم کے معاون خصوصی برائے احتساب شہزاد اکبر نے کہا ہے کہ قائد حزب اختلاف شہبازشریف جن فرشتوں کو کروڑوں روپے کا دودھ  بیچتے تھے وہ سامنے آ چکے ہیں۔

میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ شہبازشریف کی اصل تکلیف یہی ہے جس سے توجہ ہٹانے کیلیے مجھ پر تنقید کی جا رہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ ہرٹرانزیکشن کی پوری تفصیلات موجود ہیں،عید بھی ہے اور شہبازشریف کےخلاف ریفرنس بھی تیار ہے۔ان کا کہنا تھا کہ اشہبازشریف پردے میں ہیں سوالوں کے جواب نہیں دے رہے۔

شہباز شریف کیخلاف جو شواہد ہیں ان سے بچنا آسان نہیں، شہزاد اکبر

شہزاد اکبر کا کہنا تھا کہ مسرورانورای او بی آئی ڈیٹا کے مطابق شریف گروپ کا ملازم ہے،حمزہ شہباز چیک لکھ دیتے تھے اور جمع کروا دیتے تھے نام نہیں لکھتے تھے۔

انہوں نے کہا کہ شہبازشریف کو ملنے والے کک بیکس کی ٹریل موجود ہے، مریم اورنگزیب نے کہا ککس بیک کے پیسے کا شہبازشریف سے تعلق ثابت کریں۔

شہزاد اکبر کا کہنا تھا کہ جو رقم آپ کے اکاؤنٹ میں جمع ہوتی ہے اس کا آپ کو حساب دینا ہوگا۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ مسرورانورنیب کی حراست میں ہے،وہ اپنا بیان بھی دے چکا ہے وہ تین چارمرلے کے گھرمیں رہتا ہے اور کروڑوں روپے شہبازشریف کے اکاؤنٹ میں جمع کراتا رہا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ مسرورانورنےایک کروڑ 90 لاکھ روپے شہبازشریف کے اکاؤنٹ میں جمع کرائے ہیں۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز