لاڑکانہ کےقریب 3بچیاں نہرمیں ڈوب کر جاں بحق

لاڑکانہ: صوبہ سندھ کے ضلع لاڑکانہ کے قریب گاوَں غلام حیدرشاہ میں 3 بچیاں نہرمیں ڈوب کرجاں بحق ہوگئیں۔

مقامی پولیس کے مطابق ریسکیو اہلکاروں نے 2 بچیوں کی نعشوں کو نکال لیا گیا جبکہ تیسری بچی کی تلاش جاری ہے۔

پولیس کے مطابق اندھیرے کے باعث ریسکیو اہلکاروں کو بچی کی نعش ڈھونڈنے میں دشواری  پیش آرہی ہے۔

خیال رہے کہ 28 اپریل کو کراچی کے علاقے سرجانی ٹاؤن میں 5 بچے ڈوب کر جاں بحق ہوئے تھے۔

مزید پڑھیں: کراچی کے نجی اسکول میں 11 سالہ طالبعلم ڈوب کر جاں بحق

ریسکیو حکام کے مطابق جاں بحق ہونے والے پانچوں بچے زیر تعمیر عمارت کے لیے کھودے گئے گڑھے میں نہا رہے تھے۔ جاں بحق ہونے والے بچوں میں 2 بھائی بھی شامل ہیں۔

جاں بحق ہونے والے تمام بچوں کی لاشیں گڑھے سے نکالنے کے بعد ورثا کے حوالے کر دی گئی تھیں۔ بچوں کی عمریں 9 سے 14 سال کے درمیان تھیں۔

پولیس کا کہنا تھا کہ زیر تعمیر عمارت کے مالک کی تلاش جاری ہے۔ حفاظتی انتظامات نہ کرنے پر مالک کے خلاف قانون کارروائی کی جائے گی۔

کچھ عرصے قبل کراچی کے علاقے سبزی منڈی کے قریب کھیل کود کے دوران جوہڑ میں ڈوب کر تین کمسن بھائی جاں بحق ہو گئے تھے۔

اہل علاقہ کے مطابق  سبزی منڈی کے قریب سپر ہائی وے سے ملحقہ گل حسن بروہی گوٹھ میں چار بھائی کھیل کود میں مشغول تھے کہ اچانک غائب ہو گئے۔

مقامی لوگوں کا کہنا تھا کہ نجانے کس وقت وہ قریب واقع جوہڑ کے قریب چلے گئے۔ کوئی ایک ڈوبا تو اسے بچانے میں چاروں اندر گر گئے۔ علاقے مکین پہنچے تو رضا کاروں کو بھی بلایا گیا۔

دو بچوں کی لاشیں اور دو کو بے ہوشی کی حالت میں جوہڑ سے نکال کر اسپتال منتقل کیا گیا جہاں تیسرا بھی دم توڑ گیا۔ چوتھے کو طبی امداد فراہم کی گئی۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز