کرکٹ کا کوئی میچ ایسا نہیں جو فکس نہ ہوا ہو, بھارتی بکی کا انکشاف


بھارتی بکی سنجیو چاولا نے پولیس کو دیئے گئے اپنے بیان میں انکشاف کیا ہے کہ کرکٹ کا کوئی میچ ایسا نہیں ہوتا جو فکس نہ ہوا ہو۔

سنجیو چاولا نے بھارتی پولیس کو بیان دیا کہ کسی فلم کی طرح کرکٹ کے ہر میچ کی ڈائریکشن اور پروڈکشن ہوتی ہے۔ میچ فکسنگ میں انڈر ورلڈ مافیا کا ہاتھ ہوتا ہے۔

سنجیو چاولا پر الزام تھا کہ وہ ہنسی کرونیے کے ساتھ میچ فکسنگ میں ملوث ہے۔ اسے دہلی پولیس نے حراست میں لیا تھا مگر بھارتی میڈیا کے مطابق اسے بھارتی عدالت سے ضمانت مل گئی ہے۔

بھارتی پولیس نے چاولا کو فروری میں لندن سے گرفتار کر کے بھارت منتقل کیا تھا اور دہلی ہائیکورٹ نے انھیں تاحکم ثانی حراست میں رکھنے کا حکم دیا تھا۔ بھارتی بکی کی گرفتاری کیلئے پولیس20 سال سے کوششیں کر رہی تھی۔

بھارتی بکی سنجیو چاولا کرکٹ کے چند بڑے اسکینڈلز میں ملوث ہیں جس میں جنوبی افریقہ کے آنجہانی کپتان ہنسی کرونیے کا فکسنگ اسکینڈل بھی شامل ہے۔ 2000 میں بھارت بمقابلہ جنوبی افریقہ میچ کو فکسڈ کرانے کے ذمہ دار سنجیو چاؤلہ کے ساتھ سابق جنوبی افریقی کپتان ہنسی کرونئے بھی ملوث تھے

دہلی پولیس نے سنہ2000 میں سنجیوچاولا اور ہنسی کرونیئے کے درمیان ہونے والی گفتگو ریکارڈ کی تھی جس کے بعد مقدمہ درج کرکے قانونی کارروائی شروع کی گئی۔

گرفتاری کے بعد بھارتی بکی نے اعتراف کیا کہ میرے پرانے دوست کمار، کلارا اور دارا بھی میچ فکسنگ میں ملوث رہے ہیں۔1993 میں انگلینڈ منتقل ہوا تھا اور میں مہنگے علاقوں میں دکانوں کا مالک ہوں۔

بھارتی بکی نے یہ اعتراف بھی کیا سارے کھیل کے پیچھےطاقت ور مافیا ہے، مزید تفصیل بیان نہیں کرسکتا کیونکہ ساتھ کام کرنے والے انڈرورلڈ کے لوگ قتل کراسکتے ہیں۔

 

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز