کورونا، ایشین انفرا اسٹرکچر بینک پاکستان کو 50 کروڑ ڈالر قرض دے گا


اسلام آباد: کورونا وائرس سے نمٹنے کے لیے ایشین انفرا اسٹرکچر بینک پاکستان کو 50 کروڑ ڈالر قرض دے گا۔

ایشین انفرا اسٹرکچر بینک کی جانب سے دیا جانے والا قرضہ کورونا وائرس اور لاک ڈاؤن کے سماجی اور معاشی اثرات کو روکنے میں استعمال ہو گا۔

یہ بھی پڑھیں: کورونا وائرس کے علاج کیلیے ایکٹیمرا انجیکشن کا ٹرائل شروع

بینک اعلامیے کے مطابق پچاس کروڑ ڈالر کا قرضہ حکومتی فنانسنگ گیپ ،صحت ، شہریوں کی معاشرتی حفاظت، خواتین سمیت غریبوں اور چھوٹے کاروبار کو معاشی بدحالی سے بچانے میں اہم کردار ادا کرے گا۔

ایشین انفرا اسٹرکچر بینک کے نائب صدر کا کہنا ہے کہ معیشت کی پیداواری صلاحیت کو طویل مدتی نقصان سے روکنا ضروری ہے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ بین الاقوامی برادری کے ساتھ مل کر مشترکہ کوششیں جاری رکھیں گے۔

بینک اعلامیے کے مطابق کورونا وائرس کی وجہ سے پاکستان کی معاشی ترقی میں بڑے پیمانے پر کمی واقع ہوئی ہے۔

انٹرنیشنل مانیٹری فنڈ (آئی ایم ایف) کے تخمینوں کے مطابق پاکستان میں ترسیلات زر میں آئندہ مالی سال کے دوران 5 ارب ڈالر کی کمی ہو گی جب کہ باہر سے ڈیمانڈ کم ہونے کی وجہ سے پاکستان کی برآمدات بھی رک گئی ہیں۔

6 ارب ڈالر کی کمی کی وجہ سے آئندہ مالی سال میں پاکستان کا خسارہ دو فیصد بڑھ جائے گا۔

یہ بھی پڑھیں: یورپ: کورونا کیسز میں کمی کے بعد زندگی معمول کی طرف لوٹ آئی

ایشین انفرا اسٹرکچر بینک نے کورونا وائرس سے نمٹنے کے لیے رکن ممالک کے لیے دس ارب ڈالر کا فنڈ قائم کیا ہے۔

بینک کی جانب سے 10ارب ڈالر کا فنڈ ممبر ممالک کی کورونا وبا کے دوران مالی معاونت کے لیے قائم کیا گیا ہے۔

فنڈ کو کورونا ایکٹو رسپانس اینڈ ایکس پنڈیچر سپورٹ (کیئرز ) کا نام دیا گیا ہے۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز