بوٹسوانا میں سینکڑوں ہاتھیوں کی پر اسرار موت

جنوبی افریقہ کے ایک ملک بوٹسوانا میں دو ماہ کے دوران سینکڑوں ہاتھی پر اسرار طور پر ہلاک ہو گئے ہیں۔

حکام کا کہنا ہے کہ مئی اور جون کے دوران 350 سے زائد ہاتھی ہلاک ہوگئے ہیں اور موت کی وجہ معلوم نہیں ہوسکی ہے۔

حکومت کے مطابق، لیبارٹریز میں بھجوائے گئے نمونوں کے نتائج آنے میں چند روز لگ سکتے ہیں اور فی الحال کسی کو معلوم نہیں ہے کہ جانور کیوں مر رہے ہیں۔

بوٹسوانا جنوبی افریقہ کا تیسرا بڑا ملک ہے جہاں ہاتھیوں کی تعداد تیزی سے کم ہو رہی ہے۔ گزشتہ سال  قدرتی اجزا سے تیار کی گئی زہر سے 100 ہاتھی ہلاک ہوگئے تھے اور ڈاکٹرز کہہ رہے ہیں حالیہ اموات زہر سے نہیں ہوئیں۔

ڈاکٹرز کا کہنا ہے سینکڑوں ہاتھیوں کی موت کی وجہ زہر یا وبا ہو سکتی ہے۔ موت کی صحیح وجہ جانے بغیر انسانوں سے جانوروں میں منتقل ہونے والی بیماری کو بھی خارج از امکان قرار نہیں دیا جا سکتا۔

حکام کا کہنا ہے کہ ہاتھیوں کی پر اسرار موت کی وجہ پانی یا مٹی میں کسی چیز کی ملاوٹ بھی ہو سکتی ہے۔برطانیہ میں قائم خیراتی ادارے نیشنل پارک ریسکیو وابستہ ڈاکٹرمیکان کا خیال ہے کہ کورونا وائرس جانوروں میں پھیلنا شروع ہوگیا ہے جس کے باعث ہاتھوں کی موت ہوئی اور یہ انسانوں کیلئے بھی مسئلہ بن سکتا ہے۔

موت کی اصل وجہ تو فی الحال معلوم نہیں ہوسکی لیکن ڈاکٹرز کا کہنا ہے کہ اکثر ہاتھی منہ کے بل گرے ہوئے تھے جس لگتا ہے کہ ان کے اعصابی نظام پر حملہ ہوا ہے۔ حکومت نے ہاتھیوں کے نمونے لیبارٹری بھجوا دیے ہیں جس کے بعد موت کی اصل وجہ معلوم ہو سکے گی

 

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز