ایم 8 پر کام کا آغاز اولین ترجیح ہے، عاصم سلیم باجوہ

اسلام آباد: چیئرمین سی پیک عاصم سلیم باجوہ نے کہا ہے کہ ایم 8 پر کام کا آغاز اولین ترجیح ہے۔

چیئرمین سی پیک عاصم سلیم باجوہ نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر لکھا کہ بلوچستان میں ہوشاب سے آواران تک 146 کلو میٹر سڑک کا منصوبہ ہے اور سی پی ڈبلیو ڈی سے منصوبے کی منظوری لے لی گئی ہے۔

انہوں نے کہا کہ منصوبے پر 26 ارب روپے کی لاگت آئے گی جبکہ سڑک آواران کے اضلاع کو دیگر علاقوں سے منسلک کرے گی اور یہ منصوبہ جنوبی بلوچستان میں ترقی اور خوشحالی لائے گا۔

دو روز قبل عاصم سلیم باجوہ کا کہنا تھا کہ سی پیک پاکستان کے روشن مستقبل کی ضمانت ہے، اس منصوبے کو ہر حال میں پایہ تکمیل تک پہنچائیں گے۔

ان کا کہنا تھا کہ سی پیک منصوبے کے ثمرات ہر پاکستانی تک پہنچنے جائیں گے۔

گزشتہ ہفتے چیئرمین سی پیک اتھارٹی عاصم سلیم باجوہ نے  تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا تھا کہ سی پیک کے فیز ون منصوبوں کو تیزی سے مکمل کیا جا رہا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ آج ایک تاریخی دن ہے جب پاکستان میں ماس ٹرانزیشنل پراسس کی بنیاد رکھی جارہی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ معاہدوں سے صنعتوں کو فروغ ملے گا اور پاکستان میں سرمایہ کاری سے دونوں ملکوں کو فائدہ ہو گا جبکہ چین پاکستان میں سرمایہ کاری میں دلچپسی لے رہا ہے۔

یہ بھی پڑھیں جس کو نیب قانون پر اعتراض ہے وہ پٹیشن دائر کر دے، صدر مملکت

عاصم سلیم باجوہ کا کہنا تھا کہ سی پیک منصوبہ پاکستان اور چین کے آئرن برادر ہونے کا عکاس ہے اور معاہدوں سے پاکستان میں نئی سرمایہ کاری آئے گی جبکہ سی پیک منصوبے پاکستانی عوام کو روزگار کے مواقع فراہم کریں گے۔

ان کا کہنا تھا کہ سی پیک سے پاکستان اور خطے میں خوشحالی آئے گی۔ سی پیک کے فیز ون منصوبوں کو تیزی سے مکمل کیا جا رہا ہے۔ سی پیک فیز ٹو میں نئے ریلوے ٹریک بنائے جائیں گے جس سے ریلوے کی کارکردگی اور رفتار میں تیزی آئے گی۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز