وزیراعظم کی گورنر سندھ اور اسد عمر کو کے الیکٹرک انتظامیہ سے ملاقات کی ہدایت

اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان نے گورنرسندھ عمران اسماعیل، وزیر منصوبہ بندی اسد عمر اور معاون خصوصی برائے پاور ڈویژن شہزاد قاسم کو ہدایت کی ہے کہ وہ جلد کے الیکٹرک انتظامیہ سے ملاقات کریں تاکہ کراچی میں بجلی بحران کا حل تلاش کیا جاسکے۔

اسلام آباد میں گورنرسندھ عمران اسماعیل سے ملاقات کے دوران وزیراعظم نے سندھ کی صورتحال اورخصوصاً کورونا صورتحال پر تبادلہ خیال کیا۔ گورنرسندھ  نے کورونا سے متعلق وزیراعظم کے وژن اور کامیاب حکمت عملی کو سراہا۔

وزیراعظم نے کے الیکٹرک سے متعلقہ معاملات کے حل کے لیے عمران اسماعیل، اسدعمر اور شہزاد قاسم اور گورنرسندھ کو ہدایت کی کہ وہ کےالیکٹرک انتظامیہ سے جلد ملاقات کریں تاکہ مسائل کاحل ممکن بنایاجا سکے۔

خیال رہے کہ گزشتہ روز پاکستان تحریک انصاف کے کراچی سے تعلق رکھنے والے رکن قومی اسمبلی عامرلیاقت نے وفاقی وزیر تونائی عمرایوب کو کراچی میں بجلی کے بحران اور لوڈ شیڈنگ کا ذمہ دار ٹھہراتے ہوئے ان کے احتساب کا مطالبہ کیا تھا۔

کے الیکٹرک کے دفتر کے باہر پارٹی کارکنوں کے ہمراہ احتجاجی کیمپ میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے عامرلیاقت نے کہا تھا کہ انہوں نے اسمبلی کے فلور پر اور دیگر کئی موقعوں پرعمرایوب کی توجہ کراچی میں بجلی کے بحران کی طرف دلوائی، لیکن وزیر نے صاف انکار کرتے ہوئے کہا کہ شہر قائد میں لوڈ شیڈنگ کے ہم ذمہ دار نہیں ہیں۔

مزید پڑھیں: کراچی بارش: چھتیں گرنے سے 4 بچوں سمیت 9 افراد جاں بحق

انہوں نے کہا تھا کہ حکومت میں کچھ کالی بھیڑیاں گھس آئی ہیں جن کی وجہ سے حکومت کو بھی تنقید کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ وزیراعظم عمران خان ایسے لوگوں کو حکومت سے باہر پھینکیں، جو ان کی بدنامی کا سبب بن رہے ہیں۔

پی ٹِی آئی رہنما عامرلیاقت نے کہا تھا کہ وزیر توانائی عمرایوب کا رویہ غیرذمہ دارانہ ہے۔  لوڈشیڈنگ کامسئلہ حل نہیں ہوا تو بھوک ہڑتال کریں گے۔ بجلی لوڈ شیڈنگ پر کوئی نوٹس لینے کو تیارنہیں ہے، چیف جسٹس آف پاکستان اس مسلے پر ازخود نوٹس لیں۔

انہوں نے کہا تھا کہ نیپرا نامعلوم افراد کا ادارا ہے۔ یہ ابراج گروپ کون ہے؟  عمران خان میرا لیڈر ہے، میں کراچی کا بیٹا ہوں، کیا میں یہ کہوں کہ سب ٹھیک ہے۔ عارف نقوی کا عمران خان سے کوئی تعلق نہیں ہے۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز