گندم: ذخیرہ اندوزوں کے خلاف کریک ڈاؤن کا فیصلہ

اسلام آباد: ملک بھر میں گندم کی ذخیرہ اندوزی میں ملوث عناصر کے خلاف کریک ڈاؤن کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

گندم: برآمد پر پابندی، درآمد کی اجازت

ہم نیوز کے مطابق یہ فیصلہ وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت گندم اور آٹے کی فراہمی کو یقینی بنانے سے متعلق اجلاس میں کیا گیا۔

ذرائع کے مطابق اعلیٰ سطحی اجلاس میں چینی کی مناسب نرخوں پر دستیابی کی صورتحال کا بھی جائزہ لیا گیا۔ اعلیٰ حکام نے اس ضمن میں بریفنگ دی۔

ذرائع کے مطابق وزیراعظم کی زیرصدارت منعقدہ اجلاس میں پنجاب اور خیبرپختونخوا کے چیف سیکریٹریز نے  گندم اور آٹے کی قیمتوں پر تفصیلی بریفنگ دی۔

ہم نیوز کو اس ضمن میں ذرائع نے بتایا کہ دی جانے والی بریفنگ میں کہا گیا کہ پنجاب کے تمام شہروں میں 20 کلو آٹے کا تھیلا 860 روپے پر فراہم کیا جا رہا ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ اعلیٰ ترین سطح کے اجلاس میں بتایا گیا کہ حکومت پنجاب کی جانب سے 18 ہزار ٹن گندم روزانہ فراہم کی جارہی ہے جب کہ صوبہ خیبر پختونخوا کی ضروریات کو پورا کرنے کے لیے  20 فیصد آٹا بھجوایا جا رہا ہے۔

اجلاس میں چیف سیکریٹری پنجاب نے صوبے میں چینی کی دستیابی اور قیمتوں سے متعلق بریفنگ دی جب کہ چیف سیکریٹری خیبرپختونخوا نے گندم کی اسمگلنگ کی روک تھام سے متعلق آگاہی فراہم کی۔

وزیراعظم کی گندم کی اسمگلنگ، ذخیرہ اندوزی سے متعلق پالیسی پر عمل درآمد کی ہدایت

ہم نیوز کے مطابق وزیراعظم عمران خان نے اعلیٰ سطحی اجلاس میں ہدایت دی کہ گندم کی ذخیرہ اندوزی میں ملوث افراد کے خلاف کریک ڈاؤن کیا جائے۔

ان کا کہنا تھا کہ گندم کی اسمگلنگ کی روک تھام کو مکمل طور پر یقینی بنایا جائے۔ انہوں نے متعلقہ حکام کو ہدایت کی کہ گندم کی وافر دستیابی کو یقینی بنانے کے لیے بین الصوبائی کوآرڈی نیشن کو مزید بہتر کیا جائے۔

ہم نیوز کے مطابق وزیراعظم نے کہا کہ صوبہ سندھ میں گندم کی ریلیز کی پالیسی کو جلد حتمی شکل دی جائے۔

انہوں نے ہدایت کی کہ گند م کی درآمد سےمتعلق منصوبہ بندی کو بھی جلد حتمی شکل دی جائے۔

پنجاب میں گندم اور آٹے کی قلت نہیں ہونی چاہیے، وزیراعظم

ہم نیوز کے مطابق وزیراعظم عمران خان نے واضح طور پر چیف سیکریٹریز کو ہدایات دیں کہ  ملاوٹ کے خلاف زیرو ٹالرینس پالیسی جاری رکھی جائے۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز