آئل ٹینکرز ایسوسی ایشن نے ہڑتال ملتوی کردی؟

اسلام آباد: پیٹرولیم ڈویژن کا کہنا ہے کہ آئل ٹینکرز ایسوسی ایشن نے ہڑتال ملتوی کردی ہے۔ آئل ٹینکرز ایسوسی ایشن کو ان کے جائز مطالبات متعلقہ اداروں تک پہنچانے کی یقین دہانی کروائی گئی ہے۔

اطلاعات کے مطابق 20جولائی کوآئل ٹینکرز ایسوسی ایشن کا وفد پیٹرولیم ڈویژن میں ملاقات کرے گا۔  ترجمان پیٹرولیم ڈویژن کا کہنا ہے کہ متعلقہ افراد پیٹرولیم مصنوعات کی ترسیل یقینی بنانے کیلئے کوشاں ہیں۔

دوسری جانب آئل ٹینکرز کنٹریکٹرز ایسوسی ایشن کےعہدیداران کا کہنا ہے کہ جب تک تحریری طورپر مطالبات تسلیم نہیں ہوتے ہڑتال ختم نہیں ہوگی۔

کراچی میں آئل ٹینکر کنٹریکٹرز ایسوسی ایشنز کی ہڑتال دوسرے روز بھی جاری ہے۔ ہوائی اڈوں، پیٹرول پمس، آئل ریفائنریزسمیت ملک بھر میں تیل کی ترسیل مکمل طور پر بند ہے۔

گزشتہ روز وزیراعظم عمران خان کے معاون خصوصی برائے پیٹرولیم نے آئل ٹینکرز ایسوسی ایشن کے وفد کو مذاکرات کے لیے بلا لیا تھا۔

ذمہ دار ذرائع نے اس ضمن میں ہم نیوز کو بتایا ہے کہ مذاکرات میں ایڈیشنل انکم ٹیکس، صوبائی سروسزسیلز ٹیکس اورٹول ٹیکس میں اضافے پربات ہوگی۔

یہ بھی پڑھیں: آئل ٹینکرز ایسوسی ایشن کو مذاکرات کیلیے بلا لیا گیا

ہم نیوز کو ذرائع نے بتایا ہے کہ ہونے والے مذاکرات میں سندھ ہائی کورٹ کے فیصلے پرعمل درآمد اور کمرشل لوڈنگ پرپابندی بھی زیر غور آئے گی۔

آئل ٹینکرز کنٹریکٹرز نے دو روز قبل غیر معینہ مدت کے لیے ہڑتال کرنے کا اعلان کیا تھا۔ صدر آئل ٹینکرز کنٹریکٹرز ایسوسی ایشن کے صدرعابد آفریدی نے اس ضمن میں بتایا تھا کہ ہمارے مسائل حل نہیں ہو رہے ۔

ان کا کہنا تھا کہ انکم ٹیکس میں اضافہ کسی صورت منظور نہیں ہے۔ ہڑتال کے دوران ہوائی جہازوں، پیٹرول پمپس سمیت کسی بھی شعبے کو تیل کی سپلائی نہیں کی جائے گی۔

عابد آفریدی نے مطالبہ کیا کہ کورونا صورتحال میں انکم ٹیکس کو 3 فیصد کر دیا ہے جسے 2 فیصد پر برقرار کیا جائے۔ صوبائی سروس اور ٹول ٹیکسز کو فی الفور ختم کیا جائے۔

صدر آئل ٹینکرز کنٹریکٹرز ایسوسی ایشن کا کہنا تھا کہ یکم نومبر 2019 سے اب تک کرایوں میں کسی قسم کا کوئی اضافہ نہیں ہوا ہے لہذا اس میں بھی اضافہ کیا جائے۔ کمرشل لوڈنگ کو فی الفور بند کیا جائے اور پرانے طرز کی گاڑیوں کے حوالے سے بھی پالیسی واضح کی جائے۔

متعلقہ خبریں