چین کا برازیل کے شہریوں پر کورونا ویکسین کا ٹرائل


برازیلیا: چین میں کورونا مریضوں کی کمی کے باعث برازیل کی لیب میں انسانوں پر ٹرائل کیا جانے لگا ہے۔

کورونا ویکسین  کے مثبت نتائج آنے پر سب سے پہلے برازیل کو ہی دی جائے گی۔

حکام کا کہنا ہے کہ برازیل کے 12 ریسرچ مراکز میں 9 ہزاررضا کاروں پرکورونا ویکسین کا ٹرائل کیا جائے گا۔

یہ بھی پڑھیں: کورونا وائرس، امریکی صدر نے خطرے کی گھنٹی بجا دی

دوسری جانب روسی ساسندانوں نے کورونا وائرس کے خلاف نئی ویکسین تیار کرلی ہے، جو اگست تک مریضوں کے لیے دستیاب ہوگی۔

ماسکو میں قائم سیکینوف اسٹیٹ میڈیکل یونیورسٹی کے سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ  نئی ویکسین 38 کے لگ بھگ انسانی رضاکار کورونا مریضوں پر جون میں آزمائی گئی تھی، جس کے حوصلہ افزا نتائج سامنے آئے ہیں۔

روسی سائننسدانوں کا کہنا ہے کہ اگست  کے وسظ تک مریضوں میں دنیا کی پہلی کورونا ویکسین تقسیم کی جائے گی کیونکہ اس کا انسانی رضاکاروں پر کلینکل ٹرائل مکمل ہوچکا ہے۔

دوسری جانب روس کی فوج نے اسی ویکسین کے متوازی ویکسین کا دو ماہ تک کلینکل ٹرائل شروع کیا ہے، جسے سے ریاستی ادارے قومی تحقیقاتی ادارہ برائے وبائی نے تیار کیا ہے۔

گیمالی نامی مرکز کے سربراہ الیگزینڈر گینٹسبرگ  نے روسی خبر رساں ایجنسی سے گفتگو کرتے ہوئے امید ظاہر کی ہے کہ کورونا وائرس کے خلاف یہ نئی ویکسین 12 سے 14 اگست کے درمیان مریضوں کے لیے مارکیٹ میں دستیاب ہوگی۔

خیال رہے کہ اس سے قبل اپریل میں آکسفورڈ یونیورسٹی کے سائنس دانوں نے کہا تھا کہ یونیورسٹی کی نئی ویکسین 6 بندروں پر آزمائی گئی تھی جس کے حوصلہ افزا نتائج سامنے آئے تھے۔

مزید پڑھیں: بل گیٹس کورونا ویکسین کی تیاری پر اربوں ڈالرز خرچ کرنے کیلئے تیار

یونیورسٹی کے ماہرین کے مطابق 4 ہفتوں بعد تمام بندر صحت مند تھے اور ان میں وائرس کی وجہ سے پیدا ہونے والی بیماری کورونا کی کوئی علامت نہیں پائی گئی تھی۔

آکسفورڈ یونیورسٹی کے سائنس دانوں نے کہا تھا کہ ہنگامی منظوری ملنے کے بعد رواں سال ستمبر تک لاکھوں کی تعداد میں یہ نئی ویکسین دستیاب ہوسکتی ہے۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز