بھارت کے 5اگست کے اقدامات مسترد،کوئی قبول نہیں کرےگا، شاہ محمود

فوٹو: نمائندہ ہم نیوز

اسلام آباد: وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی، وزیردفاع پرویزخٹک اور مشیرقومی سلامتی معید یوسف نے لائن آف کنٹرول(ایل او سی) کا دورہ کیا ہے۔

وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی اوروزیردفاع پرویز خٹک چری کوٹ سیکٹر کا دورہ کیا ہے جبکہ معاون خصوصی معید یوسف، عسکری حکام اور میڈیا کے نمائندے بھی ہمراہ ہیں۔

شاہ محمود قریشی نے بتایا کہ یہ دورہ کشمیریوں کیساتھ اظہاریکجہتی کرنے کیلئے ہے۔ ہم کشمیریوں کو یقین دلانا چاہتے ہیں کہ پاکستانی قوم ان کے ساتھ کھڑی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ کشمیریوں نے بھارت کے 5 اگست کے اقدامات کو مسترد کر دیا ہے اور 5اگست کے اقدامات کو کوئی قبول نہیں کرے گا۔ وزیرخارجہ نے کہا کہ حق خود ارادیت کی جدوجہد جاری رہے گی۔

ہم نیوز کے نمائندے طارق ملک نے بتایا کہ لائن آف کنٹرول پر عسکری حکام کی جانب سے وزیرخارجہ کو تفصیلی بریفنگ بھی دی گئی ہے۔

وزیرخارجہ کو بھارتی کی جانب سے کی جانیوالی خلاف ورزیوں کے متعلق بھی بریفنگ دی گئی۔ عسکری حکام نے بتایا کہ بھارت میں لائن آف کنٹرول پر رہنے والے سویلینز کو ہٹا دیا گیا ہے۔

بریفنگ کے دوران بتایا کہ گیا بھارتی خلاف ورزی سے پاکستانی عوام کو نقصان اٹھانا پڑتا ہے۔ عسکری حکام نے یہ بھی بتایا کہ پاک فوج کی جانب سے کس طرح بھارتی فوج کی چوکیوں کو نقصان پہنچایا جاتا ہے۔

ترجمان دفترخارجہ کے مطابق رواں برس بھارت 1732 مرتبہ سیز فائر معاہدے کی خلاف ورزی کرچکا ہے۔بھارتی اشتعال انگیزیوں سے 14 معصوم شہری شہید اور 134شہری زخمی ہوئے ہیں۔

ترجمان کا کہنا ہے کہ بھارتی اشتعال انگیزی 2003 سیزفائرمعاہدے کی خلاف ورزی ہے۔ بھارتی اشتعال انگیزی خطے میں امن وسلامتی کیلئےخطرہ ہے۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز