ہالی ووڈ کو کورونا کے باعث کروڑوں ڈالرز کا نقصان

عالمی وبا کورونا وائرس کے باعث دنیا کی سب سے بڑی فلم انڈسٹری ہالی ووڈ کو کروڑوں ڈالر کا نقصان برداشت کرنا پڑا ہے۔

امریکہ سمیت دنیا بھر میں سینما گھر بند رہنے سے کئی فلموں کا بزنس حیران کن طور پر کم رہا۔ وِل اسمتھ کی ایکشن سے بھر پور فلم بیڈ بوائز فار لائف اب تک کی سب سے کامیاب فلم رہی۔

جنوری میں ریلیز ہونے والی اس فلم نے دنیا بھر سے 65ارب روپے سے زائد کا بزنس کیا ہے۔ شرارتی، تیز، بلکہ بہت تیز اور اینیمیٹڈ’سونک دی ہیج ہوگ‘ پیسہ کمانے کے حوالے سے دوسرے نمبر پر رہی۔ اس اینی میٹڈ فلم نے دنیا بھر میں پچاس ارب روپے کے قریب کاروبار کیا۔

جانوروں کی بولی سمجھنے والے کی حرکتیں بھی فلم بینوں کو خوب بھائی۔ اسی لیے فلم’ڈولٹل‘ نے امریکہ سمیت دنیا بھر سے35ارب روپے کا بزنس کیا۔

ایکشن سے بھرپور فلم’برڈز آف پرے‘ اب تک کی چوتھی کامیاب ترین فلم قرار پائی ہے جس نے دنیا بھر سے تیس ارب روپے سمیٹے ہیں۔

سال کے پانچ مہینوں میں کمائی کے لحاظ سے پانچواں نمبر ہارر فلم’دی انویزبل مین‘ کا رہا۔ دی انویزبل مین نے دنیا بھر سے بیس ارب روپے تک کی کمائی کی۔

ہالی وڈ کی بڑی فلموں کی ریلیز کورونا وائرس کی وجہ سے تاخیر کا شکار بھی ہوئی ہے۔ جیمز بانڈ کی فلم’نو ٹائم ٹو ڈائی‘ کو اپریل میں ریلیز ہونا تھا لیکن اب اس کو نومبر میں ریلیز کیا جائے گا۔

کار ریسنگ پر مبنی سیریز’فاسٹ اینڈ فیوریئس‘ کی نویں فلم کا تین سال سے انتظار کرتے مداحوں کا انتظار طویل ہو گیا ہے۔ ون ڈیزل کی یہ فلم اپریل 2021 میں ریلیز کی جائےگی۔

چینی جنگجو خاتون پر بنائی گئی فلم مولان 24اگست کو سینما گھروں میں ریلیز کی جانی تھی لیکن اب خطروں سے کھیلتی اس جانباز خاتون کی فلم کی ریلیز کو غیر معینہ مدت تک ملتوی کر دیا گیا ہے۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز