خاتون سے مبینہ زیادتی: سینیٹ کمیٹی کی متعلقہ حکام سے رپورٹ طلب

فوٹو/فائل

اسلام آباد: سینیٹ کی انسانی حقوق کمیٹی نے گزشتہ روز لاہور کے علاقے گجر پورہ میں موٹروے پر خاتون کو اجتماعی زیادتی کے واقع کا نوٹس لیتے ہوئے متعلقہ حکام سے رپورٹ طلب کرلی ہے۔

چیئرمین انسانی حقوق کمیٹی مصطفیٰ نواز کھوکھر نے سیکریٹری مواصلات  اور آئی جی پولیس اور موٹرویز کو 16 ستمبر کو طلب کر لیا۔ بتایا جائے کہ مدد کی کال کے باجود موٹروے پولیس نے خاتون کی مدد کیوں نہیں کی۔

چیئرمین انسانی حقوق کمیٹی نے کہا کہ ایک خاتون سےزیادتی اورموٹروے پولیس کی مددکونہ آنا تشویشناک ہے۔

چیئرمین انسانی حقوق کمیٹی نے سی سی پی او لاہور عمرشیخ کو نازیبا اور بےحسی پر مبنی بیان کی وضاحت کے لیے بلایا ہے۔  سی سی پی او لاہور کو اشتعال انگیز بیان کی وجہ سے طلب کیا گیا ہے۔

مزید پڑھیں: کراچی میں بچی سے زیادتی کیبعد قتل کا معاملہ:  18 افراد کے ڈی این اے نمونے حاصل

خیال رہے کہ گزشتہ روز لاہور کے علاقے گجر پورہ میں موٹروے پر خاتون کو اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنانے کا انتہائی افسوسناک واقعہ پیش آیا تھا۔

رپورٹس کے مطابق دو افراد نے موٹر وے پہ ایک گاڑی کا شیشہ توڑ کر خاتون اور ان کے بچوں کو باہر نکالا جس کے بعد انہیں قریبی جھاڑیوں میں لے جا کر خاتون کو بچوں کے سامنے مبینہ طور پر زیادتی کا نشانہ بنایا۔

اطلاعات کے مطابق خاتون لاہور سے گوجرانوالا جارہی تھیں کہ گاڑی میں پیٹرول ختم ہو گیا تھا جس کی وجہ سے وہ رک کر اپنے خاوند کا انتظار کر رہی تھیں۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق ملزمان خاتون سے ایک لاکھ روپے نقد، سونے کے زیورات اور اے ٹی ایم کارڈز بھی لے گئے ہیں۔

پنجاب میں یہ افسوسناک واقعہ ایک ایسے وقت میں پیش آیا ہے کہ جب نئے آئی جی پنجاب کو اپنے عہدے کا چارج سنبھالے ہوئے محض چند ہی گھنٹے گزرے ہیں۔

اس سے قبل آئی جی پنجاب انعام غنی نے اپنے جاری کردہ بیان میں کہا کہ ہماری کوشش ہے جلد ملزمان تک پہنچ جائیں اور ملزمان تک پہنچنے کے لیے ثبوت بھی مل چکا ہے۔

انہوں نے کہا کہ سی سی پی او لاہور نے 2 ٹیمیں تشکیل دی ہیں اور دونوں ٹیمیں ملزمان کی گرفتاری کو یقینی بنائیں گی۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز