پشاور کے ایک سرکاری اسکول کے 5 اساتذہ میں کورونا کی تصدیق

پاکستان میں کورونا وائرس

فوٹو: فائل

پشاور: خیبر پختونخوا کے دارالحکومت پشاور کے ایک سرکاری اسکول کے 5 اساتذہ میں کورونا وائرس کی تصدیق ہوئی ہے۔

محکمہ تعلیم خیبر پختونخوا کے ترجمان نے بتایا ہے کہ اساتذہ کا تعلق گورنمنٹ ہائیر سیکنڈری اسکول نمبرایک کینٹ سے ہے۔

بتایا گیا ہے کہ ایک ہفتہ قبل اساتذہ کےکوروناٹیسٹ کرائےگئےتھے جس کی آج رپورٹس موصول ہوئی ہیں۔

انہوں نے بتایا کہ کورونا سے متاثرہ اساتذہ میں سے کوئی بھی طلبا سےنہیں ملا، اساتذہ کےدوبارہ بھی کورونا ٹیسٹ کیےجائیں گے۔

ان کا کہنا تھا کہ اساتذہ کےکورونا ٹیسٹ سے متعلق محکمہ صحت سے بات ہو چکی ہے۔

 اسلام آباد:کورونا کیسز رپورٹ ہونے پر تعلیمی ادارہ سیل

خیال رہے کہ اسلام آباد میں کورونا کیسز رپورٹ ہونے پر ایک تعلیمی ادارے کو سیل کر دیا گیا ہے۔

نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر کے مطابق ٹارگٹڈ ٹیسٹنگ کے دوران ادارے میں16کورونا کیسز رپورٹ ہوئے جس کے بعد ادارے کو سیل کر دیا گیا۔ حکام کا کہنا ہے کہ تعلیمی ادارہ تاحکم ثانی سیل رہے گا۔

واضح  رہے کہ عالمی وبا کورونا وائرس کے سبب پاکستان میں بند تعلیمی اداروں کو6 ماہ بعد ایس او پیز کے تحت کھولا گیا ہے۔ ایس او پیز پر عملدرآمد کو یقینی بنانے کی ذمہ داری صوبائی اور ضلعی سطح پر مانیٹرنگ  ٹیموں کو سونپی گئی ہے۔

 ایس او پیز کی خلاف ورزی پر  تعلیمی اداروں کو بند کیا جائے گا  اور جرمانے ہوں گے۔ پہلے مرحلے میں نویں، دسویں اور انٹرمیڈیٹ کے طلبہ کو اسکول بلایا گیا ہے جبکہ 23 ستمبر کو چھٹی سے آٹھویں جماعت کے طلبا کو سکول آنے کی اجازت ہوگی۔ تیسرے مرحلے میں تمام پرائمری سکول کے بچوں کو 30 ستمبر سے سکول جائیں گے۔

حکومت کی جانب سے ہدایت کی گئی ہے کہ بچوں میں کھانسی یا بیماری کی علامات ظاہر ہونے پر والدین انہیں اسکول ہر گز نہ بھیجیں۔ طبیعت زیادہ خراب ہو تو ٹیسٹ کرائیں، کورونا ٹیسٹ مثبت آنے پر فوری اسکول انتظامیہ کو آگاہ کریں۔

کسی بھی شخص کو درجہ  حرارت چیک کیے بغیر تعلیمی اداروں میں داخل ہونے نہیں دیا جائے گا۔ بچے کسی سے ہاتھ نہ نہیں ملائیں گے اور اسکول میں جھولا بھی نہیں جھولیں گے۔ محکمہ تعلیم کی مختلف ٹیمیں اسکولوں کا دورہ کریں گی اور ایس او پیز پر عملدرآمد کاجائز لیں گی۔

 

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز