بلوچستان اور خیبرپختونخوا میں بارڈر مارکیٹیں قائم کرنے کی منظوری

مریم نواز نے ضمنی انتخاب پر اربوں خرچ کیا: حکومت کا نیب سے رجوع کرنیکا فیصلہ

اسلام آباد: صوبہ بلوچستان اور صوبہ خیبرپختونخوا میں بارڈر مارکیٹیں قائم کرنے کی منظوری دے دی گئی ہے۔

’’پاک افغان سرحد پر پرتشدد واقعات افغان امن عمل کو پٹری سے ہٹانے کی سازش ہیں‘‘

ہم نیوز کے مطابق دونوں صوبوں میں بارڈر مارکیٹیں قائم کرنے کی منظوری وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت  پاک افغان اورپاک ایران سرحدی علاقوں سے متعلق منعقدہ اعلیٰ سطحی اجلاس میں دی گئی۔

اعلیٰ سطحی اجلاس میں چیف آف آرمی اسٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ، وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی ، چیئرمین سی پیک اتھارٹی اور وزیراعظم کے معاون خصوصی لیفٹیننٹ جنرل (ریٹائرڈ) عاصم سلیم باجوہ، خیبر پختونخواہ اور بلوچستان کے وزرائے اعلیٰ سمیت دیگر متعلقہ حکام نے شرکت کی۔

پاک ایران گیس منصوبہ، عالمی پابندیاں رکاوٹ ہیں، پاکستان

ہم نیوز کو اس ضمن میں ذمہ دار ذرائع نے بتایا کہ اعلیٰ سطحی اجلاس میں بریفنگ دیتے ہوئے بتایا گیا کہ پاک افغان اور پاک ایران سرحدوں پر چھ بارڈر مارکیٹوں کا قیام عمل میں لایا جائے گا۔

ذمہ دار ذرائع کے مطابق اعلیٰ سطحی اجلاس میں دی جانے والی بریفنگ میں سرحدی علاقوں میں کاروباری سہولتوں سے متعلق بھی بریفنگ دی گئی۔

ہم نیوز کو اس ضمن میں ذمہ دار ذرائع نے بتایا کہ وزیراعظم عمران خان نے اعلیٰ سطحی اجلاس میں بلوچستان میں دو بارڈر مارکیٹیں قائم کرنے کی منظوری دے دی۔

پاکستانی اور ایرانی کمپنیاں تعلقات کو فروغ دینے کی کاوش کررہی ہیں،قونصل جنرل

ذمہ دار ذرائع کے مطابق وزیراعظم عمران خان نے صوبہ خیبرپختونخوا میں بھی ایک بارڈر مارکیٹ قائم کرنے کی منظوری دی۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز