حافظ آباد میں لڑکی سے مبینہ زیادتی، دو ملزمان گرفتار

حافظ آباد: پنجاب کے ضلع حافظ آباد میں لڑکی سے مبینہ زیادتی کے الزام میں پولیس نے دو ملزمان کو کو گرفتار کر لیا ہے۔

ذرائع کے مطابق لڑکی سے مبینہ زیادتی کا واقعہ تھانہ صدر کی حدود کرے مبارک میں پیش آیا۔ ذرائع کے مطابق دوکان سے سامان لیجانے والی لڑکی کو محی الدین اور احتشام نامی ملزمان نے اغوا کیا اور زیادتی کی۔

ذرائع کے مطابق متاثرہ لڑکی کے والد کی جانب سے پولیس تھانہ صدر کو درخواست دی گئی، جس پر پولیس نے مقدمہ درج کر کے دو ملزمان کو گرفتار کر لیا۔

دوسری جانب  متاثرہ لڑکی کے اہل خانہ نے ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر حافظ آباد سید حسنین حیدر  سے انصاف کی اپیل کی ہے۔

خیال رہے کہ اس سے قبل لاہور کے علاقے مریدکے میں ایک اور خاتون کو شوہر کے سامنے مبینہ طور پر اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنادیا گیا۔

ہم نیوز کے مطابق نوکری کی تلاش میں لاہور آنے والے میاں بیوی کو مبینہ طور پر اغوا کر کے خاتون کو شوہر کے سامنے پانچ افراد نے اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا۔ میڈیکل رپوٹ میں خاتون سے زیادتی ثابت ہو گئی ہے۔

ہم نیوز کے مطابق مریدکے تھانہ فیروزوالہ کے علاقہ کالا شاہ کاکو میں پانچ اوباش لڑکوں نے ٹوبہ ٹیک سنگھ کی رہائشی رانی بی بی سے گینگ ریپ کیا۔

مزید پڑھیں: لڑکی سے مبینہ زیادتی، بروقت مقدمہ درج نہ کرنے پر ایس ایچ او اور محرر گرفتار

ذرائع کے مطابق رانی بی بی اپنے خاوند وارث کے ہمراہ راولپنڈی سے سفر کرتے نوکری کے سلسلہ میں لاھور پہنچی تھی۔ مینار پاکستان کے قریب رکشہ پر بیٹھ کر میاں بیوی نے رکشہ ڈرائیور کے ساتھ راستے میں چائے پی۔

ذرائع کے مطابق رکشہ ڈرائیور میاں بیوی کو کالا شاہ کاکو کھیتوں میں لے گیا۔ رکشہ ڈرئیور کے ساتھیوں نے جو پہلے سے  وہاں موجود تھے خاتون کے خاوند کے ہاتھ باندھ دیے اور پسٹل تان دیا۔ ملزمان نے خاوند وارث کے سامنے اسکی بی وی رانی کے ساتھ ریپ کیا۔

ذرائع کے مطابق میڈیکل کروانے کے بعد فیروزوالہ پولیس نے مقدمہ درج کر لیا ہے، تاہم  تاحال ملزمان کی گرفتاری عمل میں نہ آ سکی ہے۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز