تھرپارکر: وبائی امراض اور غذائی قلت کے باعث 5 بچے جاں بحق

تھرپارکر: وبائی امراض اور غذائی قلت کے باعث 5 بچے جاں بحق

فوٹو: فائل

تھرپارکر: سندھ کے ضلع تھرپارکر میں غذائی قلت اور وبائی امراض کے باعث 5 بچے جاں بحق ہو گئے۔

محکمہ صحت سندھ کے مطابق رواں ماہ وبائی امراض سے جاں بحق ہونے والے بچوں کی تعداد 24 ہو گئی ہے جبکہ غذائی قلت سے رواں سال جاں بحق ہونے والے بچوں کی تعداد 604 تک پہنچ گئی۔

تھرپارکر میں ہر ماہ سینکڑوں بچے غذائی قلت اور وبائی امراض کے باعث موت کے منہ میں چلے جاتے ہیں۔

سال 2018 میں 505 بچے بھوک اور امراض کی وجہ سے مرجھا گئے تھے جبکہ 2017 میں بھی 445، سال 2016 میں 489، 2015 میں 398 اور 2014 میں 326 بچے جاں بحق ہوئے تھے۔

خیال رہے کہ سال 2019 میں سامنے آنے والے ایک سروے کے مطابق سندھ میں پانچ سال سے کم عمر کے 50 فیصد بچوں کوغذائی قلت کا سامنا تھا۔

یہ بھی پڑھیں: پاکستان میں مزید 3 پولیو کیسز سامنے آ گئے

یونیسیف اور برطانوی ہائی کمیشن کے اشتراک سے شائع کی جانے والی قومی غذائی سروے رپورٹ 2018 کے مطابق صوبہ میں پانچ سال سے کم عمر کے بچوں میں سے 40 فیصد بچے وزن کی کمی کا شکار تھے۔ اس کے ساتھ ساتھ صوبے میں 40 فیصد نوبالغ لڑکے اور لڑکیاں بھی خون کی کمی کا شکار ہوتی ہیں۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز