مقبوضہ کشمیر میں بھارت کی ریاستی دہشتگردی کی نئی لہر جاری ہے، شاہ محمود

فوٹو: فائل

اسلام آباد: وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ مقبوضہ کشمیر میں بھارت کی ریاستی دہشتگردی کی نئی لہر جاری ہے

اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے صدر  کے نام خط میں وزیر خارجہ نے کہا کہ بھارت کےغیرقانونی زیرقبضہ مقبوضہ کشمیر میں صورتحال سنگین ہوگئی ہے۔ایک سال 9 لاکھ بھارتی فوج نے 80 لاکھ  کشمیریوں کو یرغمال بنا رکھا ہے۔

ترجمان دفتر خارجہ کی جانب سے جاری بیان کے مطابق شاہ محمود قریشی نے خط میں کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں تنظیم نو اورڈومیسائل کے کالے قوانین سے آبادی کا تناسب تبدیل کیا جارہا ہے۔ بھارت مقبوضہ کشمیرمیں آبادی کا تناسب تبدیل کرنےکی سازش کر رہا ہے۔

مزید پڑھیں: بھارت مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزی کررہا ہے، ترجمان دفتر خارجہ

ترجمان کے مطابق وزیرخارجہ نے خط میں کہا ہے کہ بھارت مسلم اکثریتی علاقےکو ہندواکثریت میں تبدیل کرنا چاہتاہے۔ بھارت بین الاقوامی قانون اور چوتھے جنیوا کنونشن کی دھجیاں بکھیر رہا ہے۔ بھارت کےاقدامات سے پیدا شدہ صورتحال امن وسلامتی کیلئے خطرہ ہے۔

ترجمان دفتر خارجہ کے مطابق  وزیرخارجہ نے کہا کہ سلامتی کونسل بھارت کو مقبوضہ کشمیر سےغیر انسانی فوجی محاصرہ ختم کرنے پر مجبور کرے۔ سلامتی کونسل بھارت کے 5 اگست 2019 کےغیرقانونی اقدامات کے خاتمے میں اپنا کردار ادا کرے۔

شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ امید ہے سلامتی کونسل معاملے کی سنگینی کا ادراک کر کے موثر اقدامات اٹھائے گی۔ سلامتی کونسل کے عملی اقدامات زیر قبضہ علاقے میں محصور کشمیریوں کی انسانی امداد کیلئےناگزیر ہیں۔ خطےمیں دیرپا امن وسلامتی برقرار رکھنے کیلئےسلامتی کونسل کافوری عملدرآمد ضروری ہے۔

ترجمان دفتر خارجہ کی جانب سے جاری بیان کے مطابق شاہ محمود قریشی نے اقوام متحدہ فوجی مبصرمشن کو مضبوط ترکرنے کی پاکستانی تجویز کو دہرایا۔

 

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز