ڈپٹی چیئرمین سینیٹ سلیم مانڈوی والا کا کورونا ٹیسٹ مثبت آگیا

اسلام آباد: ڈپٹی چیئرمین سینیٹ سلیم مانڈوی والا کا کورونا ٹیسٹ مثبت آگیا۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر اپنے پیغام میں سلیم مانڈی والا نے کورونا ٹیسٹ مثبت آنے کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ جو احباب اور دوست ان سے حالیہ دنوں میں ملے ہیں وہ بھی خود کو قرنطینہ کرلیں۔

پاکستان پیپلز پارٹی کے سینیٹر کا مزید کہنا ہے کہ ڈاکٹروں کی ہدایت پر انہوں نے خود کو گھر میں آئیسولیٹ کرلیا ہے۔ ڈپٹی چیئرمین سینیٹ نے عوام سے دعاوَں کی اپیل بھی کی ہے۔

دوسری جانب پاکستان میں کورونا وائرس کے سبب مزید 7 افراد جان کی بازی ہار چکے ہیں اور اس وبا سے مرنے والوں کی مجموعی تعداد 6 ہزار 451 ہوگئی ہے۔

نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر کی جانب سے جاری تازہ اعدادوشمار کے مطابق گزشتہ 24 گھنٹوں میں کورونا کے 566 نئے کیسز رپورٹ ہوئے ہیں۔ ملک بھر میں کورونا کیسز کی مجموعی تعداد 3 لاکھ 9 ہزار 581 ہو گئی ہے۔

پاکستان میں کورونا سے متاثر ہونے والے 2 لاکھ 95 ہزار 33 افراد صحت یاب ہوچکے ہیں اور ایکٹیو کیسز کی تعداد7 ہزار831 رہ گئی ہے۔

سندھ میں کورونا کیسز کی تعداد ایک لاکھ 35 ہزار 488 ہو گئی ہے۔ پنجاب میں 98 ہزار 941، خیبر پختونخوا میں 37 ہزار 588، بلوچستان میں 14 ہزار 932، اسلام آباد میں 16 ہزار 367، آزاد جموں و کشمیر میں 2 ہزار 630 اور گلگت میں 3 ہزار 635 کیسز رپورٹ ہو چکے ہیں۔

کورونا وائرس کے باعث پنجاب میں 2 ہزار 229 اور سندھ میں 2 ہزار 481 اموات ہو چکی ہیں جبکہ خیبر پختونخوا میں اموات کی تعداد ایک ہزار 259، اسلام آباد میں 181، بلوچستان میں 145، ‏گلگت بلتستان میں 85 اور آزاد کشمیر میں 71 ہو گئی ہے۔

یہ بھی پڑھیں:خبردار!  کورونا آپ کے اعصابی نظام پر خطرناک وار کر سکتا ہے

پاکستان کے 735 اسپتالوں میں کورونا مریضوں کےلیے سہولیات ہیں اور اسپتالوں میں کورونا کے مریضوں کیلئے وینٹی لیٹرزکی تعدادایک ہزار920 ہے۔

ملک میں 132 ٹیسٹنگ لیبارٹریز کام کر رہی ہیں اور متعدد شہروں میں ٹریس، ٹیسٹ اورقرنطینہ حکمت عملی موثر طریقے سے کام رہی ہے۔

حکومت کے مطابق پاکستان میں کورونا وائرس کے کیسز کا گراف مسلسل نیچے آرہا ہے لیکن خطرہ ابھی ٹلا نہیں ہے۔ جون کو سب سے زیادہ ایک سو تریپن اموات رپورٹ ہوئیں لیکن اب کورونا کا گراف تیزی سے نیچے آ رہا ہے۔

پاکستان میں کورونا کا پہلا کیس 26 فروری کو رجسٹرڈ ہوا اور ایک ہزاراموات 21 مئی تک ہوئیں۔ وزارت صحت کا کہنا ہے کہ کیسز میں اضافے کی رفتار کافی سست ہوچکی ہے لیکن پھر بھی احتیاط کی ضرورت ہے

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز