لاہور میں آٹا اور چینی غائب، شہری دکانوں کے چکر لگانے پر مجبور

لاہور: صوبائی دارالحکومت لاہور میں آٹا اور چینی نہ ملنے پر شہری دکانوں کے چکر لگانے پر مجبور ہوگئے ہیں۔

یوٹیلٹی اسٹورز پر بھی دونوں چیزیں دستیاب نہیں، جبکہ ایک سو ستر روپے فی کلو ملنے والا سبسڈائزڈ گھی بھی نایاب ہو گیا ہے۔

مہنگائی کے ساتھ اشیاء کی قلت کے سبب شہری دہری مشکل میں مبتلا ہوگئے ہیں۔ عام دکانوں پر آٹا اور چینی پہلے ہی غائب ہے، یوٹیلٹی اسٹورز پر بھی دونوں چیزیں دستیاب نہیں ہیں

شہریوں کا کہنا ہے کہ یوٹیلیٹی اسٹورز پر چیزیں سستی ہونے کا کوئی فائدہ  نہیں۔  یوٹیلیٹی اسٹورز پر سستا گھی اول تو مل نہیں رہا اور محدود جگہوں پر مہنگا مل رہا ہے۔

مزید پڑھیں: ایک ہفتے کے دوران مہنگائی میں 0.37 فیصد اضافہ ہوا، ادارہ شماریات

شہری کہتے ہیں کہ آٹا اور چینی کا حصول چیلنج بن چکا ہے، اگر کہیں سے ملے تو دکاندار منہ مانگے دام وصول کرتے ہیں۔ ایک شہری کا کہنا تھا کہ  جو کرائے کے گھر میں رہتے ہیں وہ اتنا مہنگا آٹا اور گھی کیسے خرید سکتے ہیں۔

دوسری جانب حکومت نے یوٹیلٹی اسٹورز پر 20 کلو آٹے کے تھیلے کی قیمت آٹھ سو جبکہ عام مارکیٹ میں آٹھ سو ساٹھ روپے مقرر کر رکھی ہے۔ چینی کا سرکاری ریٹ ستر روپے کلو ہے

شہریوں نے مطالبہ کیا ہے کہ حکومت اشیاء خورونوش کی مارکیٹ میں دستیابی سرکاری نرخوں پر یقینی بنائے تاکہ عوام کو ریلیف مل سکے۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز