ایسا الزام لگانے کے بعد خواجہ آصف پر 62/63 لگنا چاہیے، عثمان ڈار

اسلام آباد: وزیراعظم کے معاون خصوصی عثمان ڈار نے کہا ہے کہ ن لیگی رہنما خواجہ آصف کی جانب سے عائد کردہ الزامات پر کمیٹی بننی چاہیے۔ انہوں ںے کہا کہ وہ اس سلسلے میں اسپیکر قومی اسمبلی سے رابطہ کریں گے۔ ان کا کہنا تھا کہ پارلیمانی کمیٹی تحقیقات کرے تو دودھ کا دودھ اور پانی کا پانی ہو جائے گا۔

عمران خان کے پاس این آر او دینے کی طاقت ہی نہیں ہے، محمد زبیر

ہم نیوز کے پروگرام ’بڑی بات‘ میں میزبان عادل شاہ زیب کے استفسار پرانہوں نے دعویٰ کیا کہ خواجہ آصف نے سستی شہرت حاصل کرنے کے لیے الزام لگایا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ وزیراعظم نے کبھی مجھ سے خواجہ آصف سے متعلق بات نہیں کی۔

وزیراعظم کے معاون خصوصی عثمان ڈار کا کہنا تھا کہ ایسا الزام لگانے کے بعد خواجہ آصف پر 62/63 لگنا چاہیے۔

پروگرام بڑی بات میں پوچھے جانے والے سوال کے جواب میں انہوں ںے کہا کہ وزیراعظم عمران خان، خواجہ آصف کے اعصاب پرسوارہیں۔ انہوں ںے کہا کہ اپوزیشن جماعتیں خود کہہ رہی ہیں کہ خواجہ آصف سلیکٹڈ ہیں۔

بہت سے ادارے ٹکرا رہے ہیں، ٹکراؤ سے نقصان ریاست کا ہو گا: خواجہ آصف

پروگرام کے میزبان عادل شاہ زیب کی جانب سے پوچھے گئے سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ خواجہ آصف کو الیکشن کی رات آرمی چیف سے رابطہ کرنے کی ضرورت نہیں تھی۔ انہوں نے سوال کیا کہ جب خواجہ آصف الیکشن جیت گئے ہیں تو پھر کیوں دھاندلی کا رونا روتے ہیں؟

وزیراعظم کے معاون خصوصی عثمان ڈار کا کہنا تھا کہ پانچ ہزار دکانوں کے لیے 16 پرائس مجسٹریٹ ہیں تو وہ کیسے قیمتوں میں ہونے والے اضافے کو روک سکیں گے؟

انہوں نے کہا کہ ٹائیگرفورس میں پڑھے لکھے لوگ شامل ہیں۔ انہوں نے واضح کیا کہ ٹائیگرفورس صرف چیزوں کی نشاندہی کرے گی، ایکشن انتظامیہ لے گی۔

وزیراعظم کی ٹائیگر فورس کو انتظامی معاملات میں براہ راست مداخلت نہ کرنے کی ہدایت

پروگرام بڑی بات میں وزیراعظم کے معاون خصوصی عثمان ڈار نے کہا کہ مہنگائی کو کنٹرول کرنے کے لیے اقدامات کر رہے ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ کورونا کے دوران پاکستان کی پالیسی کو دنیا میں سراہا جا رہا ہے۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز