فلم’نو ٹائم ٹو ڈائی‘ کی فروخت کا امکان

فلم’نو ٹائم ٹو ڈائی‘ کی فروخت کا امکان

فائل فوٹو

کورونا وائرس کی وجہ سے انٹرٹینمنٹ کی دنیا، کھیلوں، میوزک فیسٹیولز، اور مذہبی اجتماع سبھی درہم برہم ہو گئے ہیں۔

وبا کی وجہ سے جیمز بانڈ کی فلم کو سب سے بڑا جھٹکا لگا ہے۔ عالمی وبا کے باعث جیمز بانڈ کی فلم نو ٹائم ٹو ڈائی کی ریلیز آئندہ سال بھی مشکل  دکھائی دے رہی ہے۔

کمپنی40 ارب روپے میں بننے والی فلم کو 96 ارب روپے میں فروخت کرنے کا ارادہ ہے۔ فلم کے ایپل اور نیٹ فلکس پر ریلیز کئے جانے کا بھی امکان ہے۔

کورونا وائرس کے سبب فلم کی ریلیز کو 2 اپریل 2021 تک ملتوی کر دیا گیا تھا۔ ’نو ٹائم ٹو ڈائی‘ اداکار ڈینیل کریگ کی برطانوی خفیہ ایجنسی (ایم آئی سکس) کے ایجنٹ کی حیثیت سے آخری فلم ہے۔

اس فلم میں ڈینیل کریگ کے بعد جیمز بانڈ کے کردار میں ایک نیا 007 متعارف کروایا جانا تھا اور پہلی مرتبہ یہ کردار ایک سیاہ فام خاتون کو دیا جانا تھا۔

اس سے قبل 2015 میں بانڈ کی ریلیز ہونے والی فلم سپیکٹر نے دنیا بھر کے باکس آفس پر تقریباً 900 ملین ڈالر کمائے تھے۔

نو ٹائم ٹو ڈائی کا پریمیئرنومبر2020 میں ہوگا جس میں شرکت کیلئے شہزادے ہیری اور ان کی اہلیہ میگھن کو بھی دعوت نامہ بجھوایا گیا ہے۔

یونیورسل پکچرز کے بینر تلے بننے والی مذکورہ فلم میں ڈینیئل کریگ پانچویں بار سیریز میں بونڈ کا کردار نبھا رہے ہیں۔

ڈینیئل کریگ نےاب تک جن بونڈ سیریز کی فلموں میں کام کیا ان میں 2006 میں بونڈ سیریز کی فلم ’کسینو رائل‘، 2008 میں ’کوانٹم آف سولیس‘، 2012 میں ’اسکائی فال‘ اور 2015 میں ’اسپیکٹر‘ شامل ہیں۔

ڈینیئل کریگ نے2015 میں ایک انٹرویو کے دوران کہا تھا کہ وہ آئندہ بونڈ سیریز کی فلموں میں کام نہیں کریں گے تاہم چارمرتبہ جیمز بونڈ کا کردارادا کرنے کے بعد وہ اب پانچویں مرتبہ یہ کردارادا کرتے نظر آئیں گے۔

بونڈ سیریز کی فلم ’اسپیکٹر‘ نے ساڑھے دس کھرب اور ’اسکائی فال‘ نے ساڑھے 13 کھرب کا بزنس کیا تھا۔ 50 سالہ ڈینیئل کریگ نے جیمز بونڈ کی پانچویں فلم کے لیے پانچ کروڑ ڈالرکا معاہدہ کیا ہے۔

جیمز بونڈ ایک جاسوس کا کردار ہے جسے آئن فلمینگ نے 1953 میں لکھا تھا جس پراب تک 24 فلمیں بنائی جاچکی ہیں۔ جیمز بونڈ سیریز اب تک آٹھ کھرب کا بزنس کرچکی ہے۔

 

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز