اسلام فوبیاکے متعلق وزیراعظم عمران خان کا بیان قابل ستائش ہے، ترک وزیرخارجہ

شاہ محمود قریشی نے بھی اسلام فوبیا کے بڑھتے رجحان سے متعلق ترک صدر کے موقف کی تائید

فائل فوٹو

اسلام آباد: وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے ترک اور افغان ہم منصب ٹیلی فونک رابطہ کیا ہے۔

ترکی کے وزیرخارجہ میولوت چاوش اولو کے ساتھ ٹیلی فونک رابطے میں دو طرفہ تعلقات اور باہمی دلچسپی کے امور پر تبادلہ خیال کیا گیا ہے۔

شاہ محمود قریشی نے ترک ہم منصب کوترکی کے97ویں ری پبلک دن کی مبارک باد دی ہے۔ ترک وزیرخارجہ میولوت چاوش اولو نے پشاور دھماکے پر اظہار افسوس کیا ہے۔

ترک وزیرخارجہ نے اسلام فوبیا کے حوالے سے وزیراعظم عمران خان کے بیان کو سراہا۔ شاہ محمود قریشی نے بھی اسلام فوبیا کے بڑھتے رجحان سے متعلق ترک صدر کے موقف کی تائید ہے۔

شاہ محمود نے ایف اے ٹی ایف سےمتعلق پاکستان کے لیے ترکی کی حمایت پر شکریہ ادا کیا۔

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے افغان ہم منصب محمد حنیف آتمر سے بھی ٹیلی فون پر رابطہ کیا ہے۔

پاکستانی وزیرخارجہ نے کہا کہ خطے میں استحکام افغانستان میں قیام امن کےساتھ وابستہ ہے۔ پاکستان اور افغانستان کے میں تاریخی برادرانہ تعلقات ہیں۔

شاہ محمود قریشی نے افغان ہم منصب کو افغان وولسی جرگہ کے اراکین کی ملاقات سے آگاہ کیا۔ انہوں نے کہا کہ بین الافغان مذاکرات کی صورت میں افغان قیادت کے پاس امن کا بہترین موقع ہے۔

وزیرخارجہ نے کہا کہ پاکستان خوشحال ،پرامن اور مستحکم افغانستان کا خواں ہے۔ افغانستان میں امن کےلیے بین الافغان مذاکرات کا نتیجہ خیز ہونا ضروری ہے۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز