مقبوضہ کشمیر: عمر عبداللہ کی مودی سرکار کے خلاف مشن پر روانگی

مقبوضہ کشمیر: عمر عبداللہ کی مودی سرکار کے خلاف مشن پر روانگی

سری نگر: مقبوضہ کشمیر کے سابق وزیراعلیٰ عمر عبداللہ نے کہا ہے کہ ہماری ریاست کے تقسیم کے فیصلے کو ہم پر تھوپا گیا ہے لیکن ہم اسے تسلیم نہیں کریں گے۔

عید میلاد النبیﷺ: بھارتی انتظامیہ نے فاروق عبداللہ کو حضرت بلؒ کی درگاہ جانے نہیں دیا

ہم نیوز کے مطابق انہوں نے یہ بات ایک اعلیٰ سطحی وفد کے ہمراہ سری نگر سے روانگی کے وقت دیے جانے والے پیغام میں کہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم حکومت ہند کی جانب سے کیے جانے والے فیصلے کے خلاف لڑیں گے اور اس وقت تک چین سے نہیں بیٹھیں گے جب تک کہ پانچ اگست کے فیصلوں سے قبل کی ریاست جموں و کشمیر کو واپس حاصل نہ کرلیں۔

نیشنل کانفرنس کے مرکزی نائب صدر عمر عبداللہ کی قیادت میں مقبوضہ جموں و کشمیر کے مختلف علاقوں کے دورے پر نکلا ہے جو لوگوں سے ملاقات کرکے انہیں اس بات پر آمادہ کرنے کی کوشش کرے گا کہ وہ بھارت کی مودی سرکار کے خلاف ان کا ساتھ دیں۔

چین کی مدد سے جموں و  کشمیر کی خصوصی حیثیت بحال ہو گی، فاروق عبداللہ

ذرائع ابلاغ کے مطابق سابق وزیراعلیٰ عمر عبداللہ کی قیادت میں نکلنے والے وفد کو پیپلز الائنس کا نام دیا گیا ہے۔

عمر عبداللہ اور نیشنل کانفرنس کی جانب سے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ’ٹوئٹر‘ پر جاری کردہ پیغامات میں کہا گیا ہے کہ وہ ریاست کا بٹوارہ تسلیم نہیں کرتے ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ کیا جانے والا فیصلہ پارلیمنٹ نے نہیں کیا ہے۔

مودی نے بھارتیوں کو کشمیر اور لداخ میں زمینیں خریدنے کا اختیار دیدیا

عمر عبداللہ کی جانب سے جاری کردہ پیغام کو سابق وزیراعلیٰ اور صدر پی ڈی پی محبوبہ مفتی نے بھی ری ٹوئٹ کیا ہے اور جانے والے وفد کو اپنی حمایت کی یقین دہانی کرائی ہے۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز