ایاز صادق کا بیان بالکل درست تھا، احسن اقبال

احسن اقبال پر 7 دسمبر کو فرد جرم عائد کی جائے گی

فوٹو: فائل

لاہور: پاکستان مسلم لیگ نواز کے مرکزی جنرل سیکرٹری احسن اقبال نے کہا ہے کہ بھارتی پائلٹ ابھی نندن سے متعلق ایاز صادق کا بیان بالکل درست تھا۔

لاہور میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے احسن اقبال نے کہا کہ بھارتی پائلٹ کو چھوڑنا ہی تھا تو دو سے چار روز انتظار کرلیا جاتا۔ ہم پاکستان کے تمام اداروں کا احترام کرتے ہیں۔ ادارے تبھی مضبوط ہونگے جب آئین کے مطابق چلیں۔

کوئٹہ میں پاکستان ڈیموکریٹک مومنٹ کے جلسے میں ن لیگ کی صوبائی قیادت کو مدعو نہ کرنے کے سوال پر انہوں نے کہا کہ بلوچستان نیشنل پارٹی کے سربراہ اختر مینگل اور ن لیگی رہنما ثنا اللہ زہری کے درمیان ایک تنازعہ ہے۔ ہم نہیں چاہتے تھے کہ ثنا اللہ زہری جلسے میں شریک ہوں۔

ایک اور سوال کے جواب میں احسن اقبال نے کہا ن لیگ کے رہنما عبدالقادر بلوچ استعفیٰ دینا چاہیں تو انکی مرضی ہے۔ مسلم لیگ ن پاکستان کے آئین کی محافظ ہے۔ ہمارا بیانیہ آئینی شکنی کے خلاف ہے۔

یہ بھی پڑھیں: ایاز صادق نے جو بات کی وہ ان کا ذاتی مشاہدہ تھا، شاہد خاقان عباسی

انہوں نے کہا کہ سیاست ہم کر رہے ہیں لیکن بغاوت حکومت کر رہی ہے۔ پاکستان کے انتخاب کو غیر متنازعہ ہونا چاہیے۔ مسلم لیگ ن اپنے بیانیے پر چٹان کی طرح متحد ہے۔

اس سے قبل لاہور میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوے مسلم لیگ ن کے رہنما ایاز صادق نے کہا کہ میرے بیان کو سیاسی رنگ دینے کی کوشش کی گئی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ کسی کو حق نہیں کہ وہ کسی کو غدار کہے، بھارتی میڈیا کی اسٹریٹجی اپناتے ہوئے حکومتی نمائندوں نے میرے بیان کا غلط مطلب نکالا۔

ایاز صادق نے کہا کہ افواج پاکستان کو سیاسی لڑائی سے باہر رکھا جائے۔ حکومت نے میرے بیان کو غلط رنگ دے کر پاکستان کی خدمت نہیں کی۔

سابق اسپیکر قومی اسمبلی نے کہا کہ بھارت ناپاک عزائم میں کبھی کامیاب نہیں ہوگا، دشمن کی ہر سازش کو ناکام بنائیں گے، ہم سب محب وطن پاکستانی ہیں۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز