بچوں کی صحت پر کوئی سمجھوتہ نہیں ہوگا، وزیر تعلیم

فوٹو: فائل

اسلام آباد: وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود نے کہا ہے کہ اسکولوں کےحوالے سے فیصلہ اگلے ہفتے اجلاس میں ہوگا، بچوں کی صحت پر کوئی سمجھوتہ نہیں کیا جائے گا۔

شفقت محمود کا کہنا تھا کہ تجویز ہے کہ سلیبس کو کم اور گرمیوں کی چھٹیوں کو ختم کر دیں یا اکیڈیمک سال آگے کردیں لیکن بچوں کی صحت پر کوئی سمجھوتہ نہیں ہوگا۔

یہ بھی پڑھیں: گلگت بلتستان کے تمام تعلیمی ادارے ایک ہفتے کیلئے بند کر دیئے گئے

وزیر تعلیم نے کہا کہ پورے ملک میں نصاب کو ایک کرنے کی کوشش کررہے ہیں۔ لوکل گورنمنٹ کا سسٹم تیار ہو گیا ہے، جلد نافذ کریں گے۔

شفقت محمود کا کہنا تھا کہ ہیلتھ سہولت کارڈ سے ایک خاندان 7لاکھ 40 ہزار روپے کا علاج کسی بھی اسپتال سے کرا سکتا ہے، یہ ایک بہترین سہولت ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ کم آمدنی والے خاندانوں میں 12ہزار روپےکے حساب سے رقوم فراہم کی گئیں، جلد ریڈیو چینل کے ذریعے پہلی جماعت سے 5ویں جماعت کے طلبا کو تعلیم دی جائے گی۔

وفاقی وزیر تعلیم کا کہنا تھا کہ پاکستان میں الگ الگ طبقہ اور ثقافت سے تعلق رکھنے والے لوگ رہتے ہیں، ہم نے کورونا سے پہلے 50 ہزار طلبہ کو ٹیکنالوجی کے اداروں میں مفت داخلے دیے۔

یہ بھی پڑھیں: تعلیمی ادارے 15 اکتوبر سے بند ہونے والی خبریں غلط اور جعلی ہیں، شفقت محمود

وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود کا کہنا تھا کہ جدید طرز کے لیکچرز اور تعلیمی نظام پر کام شروع کر دیا ہے، ٹیلی میڈیسن کے شعبہ میں بہت کام ہو رہا ہے۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز